سال 2019 میں ایم ڈی واٹر بورڈ اسداللہ خان کے خاندان کو بڑا صدمہ برداشت کرنا پڑا

سال2019 جہاں بہت سی خوشیاں دے کر گیا وہاں کچھ اداسی بھی بکھیر گیا۔  کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کے منیجنگ ڈائریکٹر اور ہردلعزیز افسر  اسداللہ خان کی ہمشیرہ  رضائے الہی سے وفات پا گئیں  ۔یو ں  اسداللہ خان کی زندگی کا سب سے بڑا سرمایا  اس فانی دنیا سے چلا گیا یقینی طور پر موت برحق ہے اور انسان کو ایک دن اس کا مزہ چکھنا ہے ہم سب کو اپنے خالق کی طرف لوٹ کر جانا ہے ۔ اللہ تعالی سے دعا ہے کہ اسد اللہ خان اور ان کے اہل خانہ کو صبر جمیل عطا فرمائے اور ان کی ہمشیرہ  کو  جنت الفردوس میں بلند درجات عطا فرمائے ۔آمین  اسداللہ خان اس لحاظ سے قابل تعریف انسان ہیں کہ انہوں نے اپنے ادارے میں ملازمین کی فلاح و بہبود اور ان کی بہتری اور ترقی کے لئے بھرپور اقدامات یقینی بنائے ہیں اور اس کے ساتھ ساتھ شہریوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی کے علاوہ نقاس  آپ کے معاملات کی بہتری کے لیے بھی گراں قدر خدمات انجام دے رہے ہیں یہ ایک مشکل کام ہے اور بڑا چیلنج ہے جسے وہ خوش اسلوبی سے انجام دے رہے ہیں بطور ایم ڈی واٹر بورڈ ہونے شہر میں آگ لگنے کے واقعات میں جانی اور مالی نقصانات پر فوری قابو پانے کے لیے ہنگامی بنیادوں پر ٹینکروں کے ذریعے پانی کی فراہمی کے جو انتظامات کی ہے وہ قابل تعریف اور قابل ستائش ہیں اور یقینی طور پر یہ شہر کی بہت بڑی خدمت ہے ان کے اچھے اقدامات یقینی طور پر ان کی اعلی خاندانی اقدار کا پتا دیتی ہیں اب ان کے پاس موقع ہے کہ وہ مزید نے کام کریں اور نیکیاں کر کے دونوں کی خدمت جاری رکھیں گے تاکہ ان کی ہمشیرہ  کی روح کو خوشی ہو  ان کے لیے دعا ہے کہ وہ اسی طرح  وہ اپنے والدین اور خاندان کا نام روشن کرتے رہیں ۔



اپنا تبصرہ بھیجیں