کیا پاکستان کے ارب پتی غریب ہو رہے ہیں ؟

فراد تیزی سے غریب ہو رہے ہیں ؟
اکثر لوگ اس تاثر کی نفی کرتے ہیں اور ان کا کہنا ہے کہ یہ صرف کہنے کی بات ہے اصل میں ارب پتی افراد ہی مزید دولت جمع کر رہے ہیں اور ان کی دولت میں ہر گزرنے والے دن کے ساتھ اضافہ ہو رہا ہے ۔
پاکستان کے کامیاب اور دولت مند افراد میں ایک نام عارف حبیب گروپ گروپ آف کمپنیز کے چیئرمین عارف حبیب کا بھی ہے ۔
بلاشبہ حرف ابیب کا شمار پاکستان کے قابل فخر کامیاب ذہین اور پراعتماد کاروباری افراد میں ہوتا ہے جنہوں نے اسٹاک بروکر سے ٹاپ بزنس مین کا سفر نہایت کامیابی سے طے کیا اور بزنس کی دنیا میں بے شمار کامیابیاں سمیٹ کر دنیا بھر میں پاکستان کا نام روشن کیا خود دولت مند ہونے کے ساتھ ساتھ ملک بھر میں بڑے پیمانے پر روزگار کے بے پناہ مواقع فراہم کئے جو ایک قومی خدمت ہے ۔
آج ملک کا وزیراعظم ہو یا آرمی چیف ۔جب بھی ملکی معیشت کی بہتری اور ترقی کے لئے کوئی مشاورت درکار ہوتی ہے تو ارفع بھی ان گنے چنے لوگوں میں شامل ہیں جن کو سب سے پہلے یاد کیا جاتا ہے اور ان سے قیمتی مشورے مانگے جاتے ہیں ۔
اپنی جوانی سے لے کر اپنی اولاد کی جوانی تک ۔محنت اور ذہانت کے بل بوتے پر عارف حبیب نے کمال کامیابیاں حاصل کیں وہ دوسروں کے لئے روشن مثال بن گئے ان کے قریبی لوگوں کا کہنا ہے کہ وہ پاکستان میں ٹیکس کے موجودہ نظام اور طریقہ کار سے بالکل مطمئن نہیں ہیں اور یہی بات وہ اہم سرکاری اور حکومتی شخصیات کے سامنے بھی رکھ چکے ہیں کہ یہاں ڈبل اور ٹرپل ٹیکسیشن سے کھڑا کاروباری طبقہ پریشان رہتا ہے ناراض رہتا ہے اور ٹیکس نیٹ سے باہر رہنے والے ہر طرح سے آزاد اور خوش ہیں ان کے قریبی لوگوں کا کہنا ہے کہ ملک میں پچاس اور زیادہ سے زیادہ سو دولت مند لوگ ہیں جو بہت اہمیت کے حامل ہیں ان کے بارے میں طاقتور حکومتی شخصیات کو کیا بتایا جاتا ہے اور کیا نہیں ؟یہ بات اہم ہے لیکن اس بارے میں حکومت اور اہم ادارے ہی بہتر جانتے ہیں ۔
کاروباری حلقوں میں اندر ہوں آئی سی آئی کے سابق سربراہ وقار ملک کو اہم مشورے دینے والوں میں نمایاں کر دیا جاتا ہے ۔یہاں تک عرف ابیب کا تعلق ہے تو ان کے قریبی لوگوں کے مطابق والی شخصیات کو بتا چکے ہیں مجھ سمیت دولت مند لوگوں کی دولت اور سرمایہ کاری کی طاقت میں کمی آرہی ہے جتنی طاقت دو سال پہلے تھی آج اتنی طاقت نہیں ہے ۔
اگرچہ دولت مند شخص خود اپنی دولت کو چھپاتا ہے اور عارف حبیب کی کمپنیوں کے حوالے سے ایک میڈیا رپورٹ کے مطابق ان کے پاس اڑتیس 38ارب روپے سے زائد کی دولت ہے ۔لیکن کاروباری حلقے ان ہندو کو تسلیم نہیں کرتے اور ان کا کہنا ہے کہ اصل دولت سے کئی گناہ زیادہ ہوگی ۔
عارف ابھی گروپ اس وقت سیمنٹ اسٹیل انرجی فنانشل سروسز فرٹیلائزر اور ریئل اسٹیٹ ڈویلپمنٹ جیسے شعبوں میں بے پناہ دلچسپی لے رہا ہے اور خوب کما رہا ہے ۔
ہمارے یہاں ارب پتی افراد غریب کیسے ہو رہے ہیں یہ ایک دلچسپ بحث ہے دو سال میں روپیہ ڈالر کے سامنے اڑتالیس فیصد گر گیا ہے جبکہ ہماری اسٹاک ایکسچینج 27 فیصد سے زائد گری ہے
اب سوال یہ اٹھایا جا رہا ہے کہ کیا ہماری معیشت کو جو چیلنج درپیش میں اور ان سے نمٹنے کے لیے حکومت نے جو حکمت عملی بنائی ہے اور گزشتہ سال میں جو اقدامات کیے گئے ہیں ان کے نتائج سال 2020 میں کیا مرتب ہوں گے کیا ہمارے ارب پتی افراد مزید قریب ہو جائیں گے یا ہمارے ملک میں نئے ارب پتی افراد سامنے آئیں گے ؟