سیاسی پتھارے دار بے نظیر بھٹو کے نام سے خوفزدہ ہیں۔ مرتضیٰ وہاب

کراچی :  ترجمان سندھ حکومت اور مشیر قانون و ماحولیات بیرسٹر مرتضیٰ وہاب نے بے نظیر انکم سپورٹ پروگرام سے ساڑھے آٹھ لاکھ مستحقین خواتین کو نکالنے کے فیصلہ پر اپنا شدید ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ سیاسی پتھارے دار آج بھی شہید بے نظیر بھٹو کے نام سے خوفزدہ ہیں اور فلاح و بہبود کے جو منصوبے پیپلز پارٹی کی جمہوری حکومت نے غریب عوام کے لیئے مرتب کیئے تھے ان کو سبوتاژ کرنے کے لیے اپنے مکروہ حربے استعمال کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سلیکٹیڈ اور الیکٹیڈ حکومت میں یہی بنیادی فرق ہے کہ الیکٹیڈ حکومت روزگار فراہم کرتی ہے اور ملک کی غریب عوام کے لیئے فلاحی کاموں کی ترویج کرتی ہے جبکہ سلیکٹیڈ حکومت کا کوئی ایجنڈا نہیں ہوتا وہ کٹھ پتلیوں کی طرح اقتدار کے ایوان میں براجمان ہوکر عوام دشمن فیصلے کرتی ہے اور عوام کو بے روزگار کرتی ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ عوام دشمن کارگزاریوں پر بہت جلد یہ سلیکٹیڈ حکومت اپنے منطقی انجام تک پہنچے گی کیونکہ ہہ سلیکٹیڈ حکومت بے نظیر بھٹو کے نام سے خوفزدہ ہو کر ان کے موسوم فلاحی منصوبوں کو یک جنبشِ قلم ختم کرنے پر تلی ہوئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر سلیکٹیڈ روزگار نہیں دے سکتے تو کم از کم ان سے روزگار تو نہ چھینیں یہ سلیکٹیڈ صرف الزام تراشیاں کرنا جانتے ہیں۔