سندھ حکومت کا صوبے میں مزید 8 نئی جیلیں بنانے کا فیصلہ

جیل اصلاحات کے حوالے سے چیف سیکریٹری سندھ اور وفاقی محتسب کی سربراہی میں اہم اجلاس
ٹھٹھہ، نوابشاہ، قمبر شہداد، مٹھی، کندھکوٹ، ملیر اور ضلعی ویسٹ میں نئی جیلیں بنائی جائیں گی۔ ممتاز علی شاہ
سیکریٹری داخلہ کو ضلعی ملیر کے 100 اور ویسٹ کے لئے 200 ایکڑ زمین کے لئے سمری بنانے  کی ہدایت۔ صوبے کے جیلوں میں نئیں آنے والے قیدیوں کی میڈیکل اسکریننگ کی جائے۔ ممتاز علی شاہ کی سیکریٹری داخلا کو ہدایت۔ کراچی، لاڑکانہ اور شکارپور کے جیلوں میں گنجائش سے زیادہ قیدی ہیں۔ آئی جی جیل نصرت حسین منگن. اس وقت صوبے کے جیلوں کی گنجائش 13038 جب کے 17239 قیدی ہیں۔ آئی جی جیل. صوبے کی جیلوں میں 6886 قیدیوں کو پرائمری سے لے کر ماسٹرز تک کی تعلیم فراہم کی جارہی ہے۔ آئی جی جیل. وفاقی محتسب نے اس وقت تک جیل اصلاحات کے حوالے سے سپریم کورٹ میں 4 روپورٹ جمع کروائی ہیں۔ وفاقی محتسب سید طاہر شہباز۔ جنوری کے پہلے ہفتے میں بھی رپورٹ جمع کروائی جائے گی۔ وفاقی محتسب۔ سندھ حکومت نے جیل اصلاحات کے حوالے سے بھترین کام کیا ہے۔ وفاقی محتسب۔ اجلاس میں سیکریٹری داخلا سندھ، پراسیکیوٹر جنرل سندھ، سینیئر ایڈوائیز محتسب، آئی جی جیل سمیت دیگر متعلقہ افسران شریک۔