نوجوان فاسٹ بولر نسیم شاہ والدہ کے ذکر پر آبدیدہ

قومی کرکٹ ٹیم کے نوجوان فاسٹ بولر نسیم شاہ پریس کانفرنس میں والدہ کے ذکر پر آبدیدہ ہو گئے۔ اُن کا کہنا ہے کہ آسٹریلیا میں مشکل وقت گزارا جسے وہ بیان نہیں کر سکتے ، لیکن آج بہت خوش ہیں۔

نسیم شاہ نے کراچی ٹیسٹ کی پرفارمنس والد کے نام کردی۔

نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے نسیم شاہ نے کہا کہ وہ گاؤں میں ٹیپ بال سے کرکٹ کھیلتے تھے، وہاں کھیل کی کوئی سہولت میسر نہیں، وسیم اکرم ، وقار یونس اور شعیب اختر کو ٹی وی پر دیکھا کرتے تھے، شین بونڈ کی بولنگ دیکھ کر فاسٹ بولر بننے کا شوق پیداہوا۔

پریس کانفرنس کے دوران دورہ آسٹریلیا کے ذکر پر نسیم شاہ آب دیدہ ہو گئے، اُن کا کہنا تھا کہ جو مشکل وقت گزارا، ان کے پاس الفاظ نہیں کہ بیان کرسکیں، سوچا تھا کہ اپنی پہلی پانچ وکٹ کی پرفارمنس اپنی والدہ کے نام کروں گا۔

یہ بھی پڑھیے: پاکستان نے ٹیسٹ سیریز اپنے نام کرلی

آسٹریلیا کے خلاف ٹیسٹ ڈیبیو کرنے والے نسیم شاہ اپنے تیسرے ہی ٹیسٹ میں 5 وکٹیں حاصل کرکے دنیا کے کم عمر ترین فاسٹ بولر بن گئے ہیں۔

نسیم شاہ نے یہ اعزاز 16 سال اور 311 دن کی عمر میں حاصل کیا ہے، ان سے پہلے یہ اعزاز پاکستان ہی کے اسپنر نسیم الغنی کے پاس تھا۔

انہوں نے1958 میں 16 سال اور 303 دن کی عمر میں ویسٹ انڈیز کے خلاف جارج ٹاؤن ٹیسٹ کی ایک اننگ میں 5 کھلاڑیوں کو آؤٹ کیا تھا۔