ڈاکٹر سکینہ فاطمہ اور 535فارغ التحصیل طلبہ وطالبات نے جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی سے ڈگری حاصل کرلی

جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی کے تیسرے جلسہ تقسیم اسناد میں سینئر صحافی رضاحیدر کی صاحبزادی ڈاکٹر سکینہ فاطمہ سمیت 535 فارغ التحصیل طلباوطالبات نے میڈیسن اور الائیڈ ہیلتھ کی فیلڈ میں ڈگریاں حاصل کیں۔میڈیسن ،فارمیسی، پبلک ہیلتھ اور بزنس ہیلتھ کیئر مینجمنٹ میں نمایاں کارکردگی دکھانے والے 15 طالب علموں کو سونے کےتمغے تقسیم کیے گئے۔ مہمانان خصوصی کے طور پر گورنر سندھ اور چانسلر جناب عمران اسماعیل نے تقریب کی صدارت کی۔ گورنر سندھ نے کامیاب ہونے والے طلباء سے امید ظاہر کی کہ وہ شعبہ صحت میں ترقی کے لئے اپنا کردار ادا کریں گے۔

انہوں نے یونیورسٹی کو سنگ میل عبور کرنے پر مبارکباد دیتے ہوئے کامیاب طلباء کو نصیحت کی کہ صوبے میں طبی عملے کی کمی کو پورا کرنے کے لیے آپ اس چیلنج کو قبول کریں اور اپنے تعلیم اور ہنر کو استعمال کرکے صوبے میں صحت کی حالت بہتر بنانے کے لیے حکومت کی مدد کریں گے۔ شیخ الجامعہ پروفیسرسید محمد طارق رفیع نے کامیاب طلباء سے اپیل کرتے ہوئےکہا کہ آپ اپنی تعلیم کا فائدہ دکھی انسانیت کو پہنچائیے خاص کر صوبے کے دور دراز علاقوں میں بنا کسی تفریق کے انسانیت کی خدمت کریں۔تقریب میں انہوں نے حاضرین کی توجہ اس بات پر مرکوز کروائی اور چانسلرکو اس بات کی یاد دہانی کروائی کہ یونیورسٹی کے ٹیچنگ ہاسپٹلز جے پی ایم سی، این آئی سی ایچ،اور این آئی سی وی ڈی چھیالیس سال سے سندھ میڈیکل کالج کے ٹیچنگ ہاسپیٹلز کے فرائض انجام دے رہے ہیں انکے وفاقی حکومت کے زیر اثر آنے س یونیورسٹی کے طالبعلموں کو کتنی مشکلات کا سامنا ہو سکتا ہے اس کے ساتھ ساتھ انہوں نے سردار یاسین ملک کو انکی یونیورسٹی اور شعبہ تعلیم کے لیئے مایہ ناز خدمات پر ڈاکٹریٹ کی اعزازی ڈگری پیش کی۔سردار یاسین ملک نے اس موقع پر یونیورسٹی کے لیے ایجوکیشن سٹی کے قریب چار ایکڑ زمین دینے کا اعلان کیا۔

 

ڈاکٹر سکینہ فاطمہ جناح سندھ میڈیکل یونیورسٹی کے تیسرے کانوکیشن میں اپنی ڈگری
وصول کر رہی ہیں اس موقع پر وائس چانسلر پروفیسر سید محمد طارق رفیع موجود ہیں