میرپورخاص کا خبرنامہ – رپورٹ تحسین احمدخان ~

میرپورخاص رپورٹ تحسین احمدخان~
پولیس نے حالیہ انتخابات میں امیدوار صوبائی اسمبلی و مشہور ٹرانسپورٹر سلامت لاکھو کے بھائی اور اس کے ڈرائیور کو گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے، ذوالفقار علی لاکھو اے ٹی سی کورٹ میں اپنے بھائی سے ملاقات کیلئے آئے تھے تفصیلات کے مطابق ٹرانسپورٹر سلامت علی لاکھو کے بھائی ذوالفقار علی لاکھو اور ان کے ڈرائیور عابد بگٹی کو گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے اس حوالے سلامت لاکھو کے بیٹے سلطان لاکھو نے رابطہ کرنے پر بتایا کہ میرے والد سلامت علی لاکھو اور گریڈ16 کے سرکاری افسر چچا امانت لاکھو اے ٹی سی کورٹ میں پیشی کیلئے آئے تھے میرے چچا ذوالفقار علی لاکھو اپنے ڈرائیور کے ہمراہ بھائیوں سے ملاقات کیلئے اے ٹی سی کورٹ گئے تو انسپکٹر امین مری اور انسپکٹر غازی خازی خان راجڑ نے پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ انہیں گرفتار کر کے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے انھوں نے بتایا کہ پولیس اس وقت مری برادری کی ایما پر کام کر رہی ہے پولیس نے اس سے قبل ہمارے منیجر علی گوہر شاہ کو گرفتار کر کے چرس کا جھوٹا مقدمہ درج کر کے اسے شدید تشدد کا نشانہ بنایا تھا پولیس مری برادری کی ایما پر ہمارے لوگوں کو گرفتار کر کے دور دراز کے تھانوں پر لے جا کر شدید تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد جھوٹے مقدمات درج کر دیئے جاتے ہیں انھوں نے آئی جی سندھ، ڈی آئی جی اور ایس ایس پی سے مطالبہ کیا کہ گرفتاریوں کے معاملے کی شفاف انکوائری کروا کر ہمارے ساتھ انصاف کیا جائے دیگر صورت میں احتجاجی تحریک چلائی جائے گی***
====================

میرپورخاص رپورٹ تحسین احمد خان~
مون سون بارشوں سے قبل میرپورخاص شہر کے اہم گندے نالوں کی صفائی مکمل نہ کی جاسکی میگا نالہ پروجیکٹ کے نالوں کی ٹوٹ پھوٹ سے نکاسی آب کا نظام مفلوج ہونے کے خدشات بڑھ گئے تفصیلات کے مطابق سندھ بھر میں مون سون امکانی بارشوں کی پیشن گوئی کے باوجود میرپورخاص شہر کے اہم نالوں سے تجاوزات کے ساتھ نالوں کی صفائی کا کام کا آغاز نہیں کیا جاسکا ہے شہر کے تمام اہم نالے کچرے سے مکمل طور پر بھرے نظر أرہے ہیں جبکہ اربوں روپوں کی لاگت سے میرپورخاص شہر میں جاری نالہ پروجیکٹ مکمل نہ ہونے اور زیر زمین نالوں کی صفائی نہ ہونے سے بھی نکاسی آب کے مساہل بڑھنے کا خدشہ ہے شہریوں کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ میرپورخاص شہر میں ناکارہ ڈرینج نظام اور نالوں کی عدم صفائی سے شہر بھر میں مون سون کی بارشوں میں بڑے نقصان کا اندیشہ ہے میونسپل کارپوریشن اور دو ٹاؤن کی جانب سے ابتک نالوں کی صفائی کا عمل شروع نہیں کیا جاسکا ہے اس حوالے سے مئیر عبدالرووف غوری سے جب رابطہ کیا تو انکا کہنا تھا کہ ہنگامی بنیادوں پر شہر کے تمام نالوں اور پمپنگ اسٹیشنوں کی مشینوں کو تیار کرنے کے لیے ایک لیٹر ایم سی رفیق سہیڑ کی جانب سے نکالا گیا ہے جس میں نالہ گینگ انچارچ اور مختلف ٹیمیں تشکیل دے دی ہیں اور عملے اور انچارجز کو پابند کیا گیا کہ تمام نالوں کی صفائی کے ساتھ ساتھ تمام نکاسی آب کے پمپنگ اسٹیشنوں کو اپ گریڈ رکھا جائے تاکہ نون سون کی بارشوں سے شہریوں کو مشکلات پیش نا اسکے ان کا مزید کہنا تھا کہ مزید موٹریں بھی اسٹینڈ بائے رکھی ہیں جن کو جہاں صورت پیش آئی گی انکو استعمال کیا جائے گا***
===================

میرپورخاص رپورٹ تحسین احمدخان~
میئر میونسپل کارپوریشن میر پورخاص عبدالروف غوری نے اپنے دفتر میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ محکمہ آبپاشی کی جانب سے واٹرسپلائی اسکیموں کو بہت کم پانی دیا جا رہا ہےتاہم ہماری ہرممکن کوشش ہے کہ عوام کو پینے کا صاف پانی فراہم کیا جائے انہوں نے کہا کہ جرواری اسٹیشن سے 11 روز بعد نہریں کھولی جا رہی ہیں جس کی وجہ سے پمپنگ اسٹیشن تک پانی نہیں پہنچ رہا ہے اور تالاب نہیں بھر رہے ہیں ان تمام تر صورتحال سے اعلیٰ حکام کو آگاہ کیا جا چکا ہے اور متعلقہ سیکرٹری کو پانی کی فراہمی کے لیے لکھا جا چکا ہے انہوں نے کہا کہ پمپنگ اسٹیشنوں پر 16 گھنٹے بجلی کی لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے اور پمپنگ اسٹیشن 7 کلومیٹر کے فاصلے پر ہیں جس کی وجہ سے پانی نہیں پہنچ رہا ہے اس مسئلے کے مستقل حل کے لیے 68 لاکھ روپے کا ڈیمانڈ نوٹس حیسکو کو جمع کرایا گیا ہے تاکہ پمپنگ اسٹیشن کے بجلی کے فیڈر تبدیل کیے جائیں انہوں نے مزید کہا کہ ویسٹ جمڑاؤ پمپنگ اسٹیشن ٹنڈو ادم روڈ کو سولر سسٹم پر منتقل کیا جا رہا ہے جس کے لیے 4 کروڑ 71 لاکھ روپے کا پروپوزل بنایا گیا ہے جو ایک ماہ کے اندر مکمل ہو جائے گا ایک سوال کے جواب میں میئر نے کہا کہ پمپنگ اسٹیشنوں پر رکھے گئے جنریٹر میں ڈیزل موجود ہے اور موٹریں درست حالت میں چل رہی ہیں***
==================


میرپورخاص رپورٹ تحسین احمدخان ~
وڈیرے کے ظلم اور بچے پر تشدد پر دل برداشتہ ہوکر خاتون نے زیریلی دوا پی کر مبینہ خودکشی کرلی خاتوں کی ہلاکت کے خلاف گاؤن مکینوں کا پریس کلب کے سامنے نعش کے ہمراہ احتجاجی دھرنا,
میں نے کسی خاتون کو زہر نہیں دیا بلکہ بیوی اور شوہر کے درمیان ہونے والے جھگڑے کے بعد پاری کولہی نے خود زہریلی دوا پی کر خودکشی کی ہے، زمیندار روشن منگریو کی پریس کانفرنس تفصیلات کے مطابق
سندھڑی گاؤں کی رہاہشی 30 سالہ 6 بچوں کی ماں پاری کولھی کی نعش پریس کلب کے سامنے رکھ کر احتجاجی دھرنے سے بات کرتے ہوہے گاؤن کے مکینوں کا کہنا تھا کہ ظالم وڈیرے روشن منگریو نے خاتون کے بچے پر بے پیمانہ تشدد کیا جس کے بعد خاتون نے دل برداشتہ ہوکر مبینہ طور پر زیریلی دوا پی کر خودکشی کرلی پولیس اب وڈیرے کے خلاف کارروائی نہیں کررہی ہے اس لیے نعش کے ہمراہ پریس کلب پر مجبور ہوکر احتجاج کرنے آہیں ہیں ہمیں انصاف فراہم کیا جاۓ دوسری جانب اس حوالے سے گوٹھ کنچاری کے رہائشی زمیندار روشن منگریو نے پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرے ہاری رامسنگھ کا بیٹا بھیمراج میری بکریاں چراتا ہے اور میں اسے ہر ماہ باقاعدگی سے تنخواہ ادا کرتا ہوں میں نے اس پر کوئی تشدد نہیں کیا بلکہ میرے ہاری رامسنگھ اور اس کی بیوی پاری کولہی کے درمیان جھگڑا ہوا جس کے پاری کولہی نے زہریلی دوا پی لی اس دوران رامسنگھ کولہی کے رشتہ دار، علاقے کے لوگ اور میں کچھ فاصلے پر موجود تھے ان سب کے سامنے ہوا رامسنگھ نے مجھے آ کر بتایا کہ میری بیوی نے زہریلی دوا پی لی ہے میں نے اسے رکشہ کر کے دیا کہ اسے کھپرو اسپتال لے جاو کھپرو اسپتال والوں نے اسے سول اسپتال میرپورخاص ریفر کیا جہاں اس کی موت واقع ہوئی ہے جس کے بعد اس نے اپنے رشتہ داروں کے ہمراہ پریس کلب کے سامنے احتجاج کے دوران مجھ پر الزام عائد کیا ہے کہ میں نے اسے زبردستی زہر پلایا ہے اور یہ الزام اس نے مجھ پر اس لئے عائد کیا ہے کہ اس پر تقریبا 8 لاکھ روپے قرض ہے انھوں نے پولیس کے اعلیٰ حکام سے مطالبہ کیا کہ وہ واقع کی شفاف تحقیقات کروائیں تاکہ اصل حقائق سامنے آ سکیں***
=======================


میرپورخاص رپورٹ تحسین احمدخان ~
میرپورخاص شہر کو گیس سپلائی کرنے والی پہلی جانی سے میرپورخاص 26 کلو میٹر لمبی 12 انچ گیس لائن پر 6 سال گزر جانے کے باوجود گیس کی فراہمی پر کام مکمل نہ کیا جاسکا میرپورخاص میں گیس اسکیموں پر کام شروع نہ کی جانے پر گیس لائن کی چھ 6 اسکیم لیپس ہوگئی گیس ذرائع میرپورخاص میں کے مختلف علاقوں میں گیس ناپید محلہ نٹ پاڑہ ۔ آدم ٹاؤن۔ایوب نگر ۔بلوچ پاڑہ نواب کالونی سمیت شہر کے مختلف علاقوں میں گیس ناپیدہ کردی گئی .
میرپورخاص سوئی سدرن کی نااہلی کے سبب عید الاضحیٰ پر گیس بحالی کے احکامات بھی نہ کیئے جاسکے میرپورخاص گیس انتظامیہ کی جانب سے گئس پریشر میں مسلسل کمی کے باعث شہری ازیت کا شکار میرپورخاص سوئی گیس آفیس شہر سے باہر ہونے اور صارفین کی شکایتی سینٹر شہر میں موجود نہ ہونے پر صارفین گیس کی پریشانیوں میں اضافہ ہوگیا.
ایوب نگر ۔نٹ پاڑہ۔ کھری کواٹر اسٹیشن روڈ پر 1987 میں ڈالی جانے والی “1 ایک انچ کی گیس لائن جگہ جگہ سے لیکیج علاقہ مکینوں کو گیس نایاب ہوگئی ہے. نٹ پاڑہ ۔اسٹیشن روڈ ایوب نگر لال چند پاغ میں گیس پریشر نا ہونے پر علاقہ مکین کھانے پکانے سے محروم ہیں.
شہر بھر میں گیس پریشر نا ہونے کے باعث گیس صارفین بجلی کے اضافی خرچ کے باوجود زندگی خطرے میں ڈالتےہوئے گیس پریشر مشین استعمال کرنے پر بھی چولہے سے ہوا یا سیوریج پانی آنے کی شکایات عام ہیں میرپورخاصمحکمہ سوئی سادر گیس کا عملہ اب تک کھلی کچہری پر کی گئی صارفین گیس کی شکایتوں ازالہ نہ کرسکا صارفین گیس نے وفاقی وزیر توانائی سندھ سادرن گیس امتیاز احمد شیخ ۔سیکرٹری سندھ سادرن گیس میرپورخاص میں گیس مصنوعی قلت پر نوٹس لیتے ہوئے گیس صارفین مسائل پر توجہ دیتے ہوئے سوئی گیس کی فراہمی کو یقینی بناہیں۔*