نیند کیوں رات بھر نہیں آتی ؟

سندھ جرائم کی لپیٹ میں، لاڑکانہ اور سکھر میں تاوان کیلئے 400 لوگ اغوا
21 جون ، 2024FacebookTwitterWhatsapp
شکارپور (نامہ نگار) شکارپور سمیت پورا سندھ جرائم کی لپیٹ میں ہے. لاڑکانہ اور سکھر میں تاوان کیلئے 400 لوگ اغواکئے گئے،اسٹریٹ کرائیمز سمیت دیگر سماجی برائیاں روز کے معمول میں شامل ہوچکی ہیں. سندھ کے عوام نے دھاندلی اور کرپشن کی بیساکھیوں پر کھڑے حکمرانوں کو مسترد کردیا ہے. سندھ میں اب صرف جے یو آئی ف ہی ان کرپٹ حکمرانوں کی مخالف جماعت ہے. ان خیالات کا اظہار جنرل سیکریٹری جے یو آئی ف صوبہ سندھ مولانا راشد محمود سومرو نے مغوی اعظم جعفری اور عبدالحکیم بروہی کی بازیابی کے لیے لگائی گئی احتجاجی کیمپ میں صحافیوں سے بات چیت کے دوران کیا. انہوں نے کہا کہ جو پولیس افسران رشوت کے عیوض پوسٹنگ لے رہے ہیں انہیں عوامی مسائل میں کوئی دلچسپی نہیں ہے. لاڑکانہ اور سکھر ڈویژن میں ڈاکوؤں نے تاوان کی خاطر 400 لوگوں کو اغوا کر رکھا ہے. شکارپور میں ہماری جماعت کے چار لوگ بھی اغوا کیے گئے. آئی جی سندھ پولیس سمیت متعلقہ ایس ایس پیز سے ملکر صورتحال سے آگاہ کیا لیکن کوئی خاطر خواہ نتائج سامنے نہیں آسکے ہیں.۔
======================

کندھ کوٹ: ڈاکوؤں کا چیک پوسٹ پر حملہ ایک اہلکار شہید، دو زخمی
21 جون ، 2024FacebookTwitterWhatsapp
کندھ کوٹ(نامہ نگار) کندھ کوٹ بدامنی پر قابو پانے میں پولیس ناکام ہو گئی پولیس اب ڈاکوؤں کے نشانے پے آ گئی ڈاکوؤں نے پولیس چیک پوسٹ پر حملہ کر کے ایک اہلکار کو شھید جبکہ دو اہلکاروں کو زخمی کر دیا فائرنگ کرتے ہوئے فرار ہونے میں ڈاکو کامیاب ہو گئے۔ کندھ کوٹ کے قریب بڈانی تھانہ کی حدود میں قائم گنڈیر پولیس چیک پوسٹ پر ریاست کیلئے درد سر بنے ہوئے کچے کے چند ڈاکوؤں نے حملہ کیا حملے میں گولیاں لگنے سے چیک پوسٹ پر تعینات تین پولیس اہلکار راجا، غلام مصطفیٰ اور صدام حسین زخمی ہو گئے تینوں اہلکاروں کا تعلق کراچی سے بتایا جا رہا ہے واقعہ کی اطلاع پر ایس ایس پی بشیر احمد بروہی نے پولیس کی بھاری نفری متاثر جگہ کی طرف روانہ کی پر ڈاکو پولیس کے شکنجے میں نہ آ سکے فائرنگ کرتے ہوئے ڈاکو آسانی سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے پولیس جائے وقوعہ پر پہنچ کر زخمی اہلکاروں کو ہسپتال پہنچایا جہاں پر ایک اہلکار غلام مصطفیٰ زخموں کے تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔

========================
سکھر حیدرآباد موٹر وے کے کام میں تاخیر، منصوبہ 8 سال قبل منظور ہوا، کام شروع نہیں ہوسکا، کروڑوں روپے کے گھپلے
21 جون ، 2024FacebookTwitterWhatsapp
خیرپور(غلام عباس بھنبھرو)سکھر حیدرآباد موٹر وے کا کام تاخیر کا شکار سکھر حیدرآباد موٹر وے8سال قبل منظور ہوا لیکن موٹر وے پر کام شروع نہیں ہوا موٹر وے کے پیسوں میں کروڑوں روپے کے گھپلے ہوئے تفصیلات کے مطابق سکھر حیدرآباد موٹر وے کا کام تاخیر کا شکارہو گیا ہے جس کی وجہ سے موٹر وے میں دلچسپی لینے والے افراد میں بڑی مایوسی پھیلی ہوئی ہے سکھر حیدر آباد موٹر وے 8 سال قبل منظور ہوا تھا جبکہ حکومت نے موٹر وے کی تعمیر کے لیے مطلوبہ رقم منظور کی اور موٹر وے کے نقشے تیار کیے لیکن موٹر وے کی تعمیر پر ابھی تک کام شروع نہیں کیا جا سکا جبکہ سکھر حیدرآباد موٹر وے کے کام میں تاخیر کے باعث موٹر وے کے لیے مختص کی گئی رقوم میں کروڑوں روپے کی خرد بر د بھی ہوئی ہے جس کی انکوائریاں چ چل رہی ہیں کچھ افراد نے گھپلوں کی رقم بھی جمع کرادی ہے سماج سدھارک تنظیموں کے رہنماؤں علی احمد میمن ایڈوکیٹ، فیاض خمیسانی ایڈوکیٹ، اختیار احمد بھنبھرو ایڈوکیٹ ، زائر حسین بھنبھرو ایڈوکیٹ اور دیگر نے جنگ بیورو آفیس خیرپور میں پہنچ کر سکھر حیدر آباد موٹر وے کی تعمیر میں تاخیر پر شدید تشویش کا اظہار کیا اور وزیر اعظم پاکستان میاں محمدشہباز شریف سے اپیل کی کہ ملکی ترقی کے لیے سکھر حیدر آباد موٹر وے کی تعمیر کا کام فوری طورپر شروع کرا کر عوام میں پھیلی ہوئی مایوسی ختم کی جائے ۔
======================

کراچی، 5 ماہ میں 62 لوگ قتل، دو تہائی قاتل گرفتار کئے، خبر نہیں بنی، وزیراعلیٰ سندھ
21 جون ، 2024FacebookTwitterWhatsapp
کراچی(اسٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہاہےکہ سندھ اسمارٹ سرویلینس سسٹم (S-4) ایک بہت ہی اہم منصوبہ ہے، ہمیں اُن روٹس پر بھی کیمرے نصب کرنے ہوں گے جو جرائم سے وابستہ افراد اختیار کرتے ہیں، سندھ کے 40 ٹول پلازوں پر جدید کیمرے نصب کیے گئے ہیں،80ہزار مجرموں کی گرفتاری میں مدد ملے گی ، مجرموں کے فرار کے روٹس پر کیمرے لگیں گے ، جوچہرے اور آٹومیٹڈ نمبر پلیٹ کی شناخت کی بھرپور صلاحیت رکھتے ہیں ،گزشتہ 5 ماہ کےدوران کراچی میں 62 لوگ مارے گئے اورٹوتھرڈ 3/2 قاتل گرفتار کیے گئے لیکن وہ خبر نہیں بنی، سندھ پولیس اہلکاروں کی فلاح وبہبود کےلیے حکومت سندھ نے محکمہ پولیس میں 5ارب روپے کی ہیلتھ انشورنس پالیسی متعارف کرا دی ہے، جس سے سندھ پولیس کے 1,27,482ملازمین اور ان کے اہلخانہ اپنی صحت کی ضروریات کے مطابق نجی اسپتالوں سے 10لاکھ روپے تک کا علاج کرواسکیں گے۔یہ بات انہوں نے سی پی او کراچی میں S-4 اور پولیس ہیلتھ انشورنس اسکیم کی افتتاحی تقریب سے خطاب کے دوران کہی۔اس موقع پر صوبائی وزیر داخلہ ضیاء الحسن لنجار اور آئی جی سندھ غلام نبی میمن نے بھی تقریب سے خطاب کیا۔ انہوں نے کہا کہ سیف سٹی کے حوالے سے حفاظتی اقدامات کو بنا کسی رکاوٹ کے یقینی بنائیں گے۔ایس4 ایک بہترین منصوبہ ہے، جس سے جدید ٹیکنالوجی کی مدد سے شہر کے تمام داخلی اور خارجی راستوں کی نگرانی کی جائے گی اور یہ جرائم کے خاتمے میں معاون ثابت ہوگا۔انہوں نے کہا کہ سی سی سی، سی اے دی اورسینٹرل ڈیٹا سینٹر سے منسلک مواصلت کی منظوری پانچ سال تک یقینی بنائی جائے۔ موثر کارروائی کے لیے لائیو اسٹریمنگ لازمی ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے NRTC کے ساتھ کیمرہ سسٹم کی خریداری کیلئے 1.567 ارب روپے کے فنڈز کی منظوری دی ۔انہوں نے کہا کہ سندھ کے 40 ٹول پلازوں پر جدید کیمروں کی تنصیب کی گئی ہے، ان میں سے 18 ٹول پلازہ کراچی میں ہیں ۔