کیا کرکٹ بورڈ کا چیئرمین سٹے باز مافیا لگواتی ہے ؟


پاکستان کرکٹ بورڈ اور کرکٹ کی تباہی

‏پاکستان ٹیم ایک ہو کر کھیلا کرتی تھی لیکن اچانک کپتان تبدیل کرنے کا بھوت چڑھ گیا اور مندرجہ ذیل واقعات کی وجہ سے پاکستان کرکٹ آج اس مقام پر پہنچ گئی ہے جہاں سب سے ہار رہے ہیں اور متجد بھی نا رہ سکے ۔ یہ سب ورلڈ کپ سے چھ سے آٹھ ماہ پہلے ہوا۔

‏۱-نجم سیٹھی نے شاداب کو کپتان بنایا
‏۲-نجم سیٹھی نے شاہد آفریدی / ہارون رشید کو چیف سلیکٹر بنایا شاہد آفریدی نے احکامات ماننے سے انکار کر دیا تھا ۔
‏۳-نجم سیٹھی نے مکی آرتھر کو کرکٹ ڈائریکٹر بنایا

‏چئیرمین تبدیل ہو گئے

‏۴- ذکا اشرف صاحب نے شاہین آفریدی کو کپتان بنایا
‏۵- ذکا اشرف صاحب نے انضمام الحق کو چیف سلیکٹر بنایا
‏انضمام الحق نے استعمال ہونے سے گریز کیا تو چیف سلیکٹر تبدیل ہو گیا۔
‏۶- ذکا اشرف صاحب نے کرکٹ کمیٹی بنائی (کمزور)
‏۷- ذکا اشرف صاحب نے کرکٹ ڈائریکٹر بنایا

‏چئیرمین تبدیل ہو گئے

‏۸- محسن نقوی صاحب نے بابر کو کپتان بنایا
‏۹- محسن نقوی صاحب نے سات سلیکٹرز بنائے
‏۱۰- محسن نقوی صاحب نے گیری کرسٹن کو کوچ بنایا

‏فرسودہ ، بوسیدہ اور کمزور سا گورنینگ بورڈ جس کے نازک کندھوں آور ہاتھوں پر پاکستان کرکٹ کا بوجھ ڈالا گیا ہے اور یہ صرف سائن کرنے کے لیئے ہیں ۔ ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن میں جو ریجن ہیں انکی ٹیم فرست کلاس نہیں کھیلتیں ۔ صرف بھالپور ریجن ہے جو فرست کلاس کھیلتا ہے اس ریجن کے صدر بھی کرکٹر ہیں اس لیئے ان پر کوئی اعتراز نہیں ۔

‏گورینگ بورڈ

‏۱- چئیرمین کرکٹ بورڈ
‏۲- حکومتی نمائندہ
‏۳- چیف سیکریٹری پنجاب
‏۴- صدر آزاد کشمیریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن
‏۵۔ صدر ڈیرا مراد جمالی ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن
‏۶- صدر لاڑکانہ ریجنل کرکٹ ایسوسی ایشن
‏۷- صدر بھاولپور ریجنلُ کرکٹ ایسوسی ایشن
‏۸- ممبر سوئی نادرن گیس پائپ لائینز
‏۹- ممبر غنی گلاس
‏۱۰- ممبر اسٹیٹ بینک آف پاکستان
‏۱۱- ممبر پاکستان ٹیلی وژن
‏۱۲- سیکریٹری کیبنیٹ ڈویژن اسلام آباد

‏یہ تمام حضرات اپنے اپنے شعبے اور ادارے میں بہت اچھے ہیں لیک ایک عاد کے علاوہ کرکٹ سے کوئی تعلق نہیں ہے جس کی وجہ سے ہماری کرکٹ کا دستور بھی سوالیہ نشان بن کر رہ گیا ہے ۔

‏ڈیٹا کامران مظفر اور خالد لطیف

‏⁦‪Kamran Muzaffer‬⁩ ⁦‪@khalidlatifs‬⁩
================================
نسیم شاہ ، عثمان خان اور وہاب ریاض وطن پہنچ گئے

ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ سے باہر ہونے کے بعد پاکستان کرکٹ ٹیم کے بعض کھلاڑی وطن پہنچ گئے ، کھلاڑی اور عہدیدار نجی ائیر لائنز کے ذریعے لاہور کے علامہ اقبال انٹرنیشنل ائیرپورٹ پر پہنچے۔

واپس پہنچنے والے کھلاڑیوں میں نسیم شاہ اور عثمان خان شامل ہیں جبکہ ٹیم کے سینئر منیجر وہاب ریاض بھی وطن پہنچ گئے ہیں ، کپتان بابر اعظم، حارث رؤف، عماد وسیم، اعظم خان اور محمد عامر ٹیم کے ہمراہ واپس نہیں آئے۔

خالد مقبول صدیقی نے پاکستان کرکٹ ٹیم پرمیچ بیچنے کا الزام عائد کردیا

واضح رہے کہ پاکستان ٹیم ورلڈ کپ کے سپر 8 راؤنڈ تک رسائی میں ناکام رہی تھی، پاکستان کو پہلے مرحلے کے 2 میچز میں شکست ہوئی تھی جس میں قومی ٹیم کو امریکا سے اپ سیٹ شکست ہوئی جبکہ قومی ٹیم، بھارت سے جیتا ہوا میچ بھی ہار گئی تھی۔
===========================

ٹی20ورلڈکپ میں ناقص کارکردگی،پی سی بی نےنئی حکمت عملی پرکام شروع کردیا

پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی ) نے ٹی 20 ورلڈکپ میں قومی کرکٹ ٹیم کی ناقص کارکردگی پر نئی حکمت عملی مرتب کرنے کی تیاری پکڑ لی۔

ذرائع کے مطابق پاکستان کی نمائندگی کرنے کیلئے کھلاڑیوں کا فرسٹ کلاس اور ڈومیسٹک وائٹ بال ٹورنامنٹ کھیلنا ضروری قرار دیا گیا اورآئندہ پاکستان سپرلیگ (پی ایس ایل) کے پرفارمرز کو فوری قومی کرکٹ ٹیم میں شامل نہ کرنے پر بھی اتفاق ہوا ہے۔

ٹی 20 و رلڈکپ میں ناقص کارکردگی، احمد شہزاد کا کھلاڑیوں کے احتساب کا مطالبہ

ذرائع نے بتایا ہے کہ کرکٹ ٹیم ہیڈکوچ گیری کرسٹن، کپتان بابراعظم اور سینئر مینجر وہاب ریاض سمیت سیلیکشن کمیٹی میں شامل دیگر ممبران کی جانب سے اس حکمت پر اتفاق کیا گیا۔

ذرائع نے مزید بتایا کہ وائٹ بال کھیلنے والے کرکٹرز کی ڈومیسٹک ٹورنامنٹ میں شرکت یقینی بنانے کیلئے حکمت عملی بنائی جائیگی۔ وطن واپس پہنچنے پر ٹیم مینجمنٹ، سیلیکشن کمیٹی اور چئیرمین پی سی بی محسن نقوی کے درمیان ملاقات کے بعد اس حوالے سے حتمی فیصلہ ہوگا۔

ٹیگز :پاکستان کرکٹ بورڈقومی کرکٹ ٹیم
==============================

ٹی 20 و رلڈکپ میں ناقص کارکردگی، احمد شہزاد کا کھلاڑیوں کے احتساب کا مطالبہ

پاکستان کرکٹ ٹیم کی ٹی 20 ورلڈ کپ میں ناقص کارکردگی پر سابق کرکٹر احمد شہزاد نے کہا ہے کہ قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ گیری کرسٹن کا بیان ان کیلئے بالکل بھی حیران کن نہیں ہے۔

سابق کرکٹراور تجزیہ کار احمد شہزاد نے ایک بیان میں کہا کہ ہم یہ بات پورے ورلڈ کپ میں کہتے رہے ہیں ، یہ ٹیم گروپ بندی کا شکارہے اور ان میں اتحاد کی کمی ہے، اس کا واحد حل احتساب ہے۔

پبلک فگر ہونے کے ناطے ہرقسم کے فیڈ بیک کیلئے تیار رہتا ہوں،حارث رؤف

انکا کہنا تھا کہ گروپ بندی میں ملوث کھلاڑیوں کو سزا ملنی چاہیے اور اگلی نسل کے کرکٹرز کے لیے ایک مثال قائم کی جانی چاہیے۔ چیئرمین پی سی بی کواس پر نوٹس لینا چاہیے۔

خیال رہے کہ پاکستان کو ٹی 20 ورلڈ کپ میں کو امریکہ کے ہاتھوں سپر اوور میں شکست اور روایتی حریف بھارت کے ہاتھوں چھ رنز سے شکست کا سامنا کرنا پڑا، جس میں وہ 120 رنز کے معمولی ہدف حاصل کرنے میں ناکام رہا۔

بعد ازاں آئرلینڈ اور امریکا کے درمیان میچ میں بارش کے برابر پوائنٹس تقسیم ہونے کے بعد پاکستان اپنی تاریخ میں پہلی بار بالواسطہ طور پر ٹی ٹوئنٹی ورلڈ کپ کے گروپ مرحلے سے باہر ہوگیا۔

آئندہ مالی سال مہنگائی کی شرح12فیصد رہنے کاامکان ہے،فچ

خیال رہے کہ قومی ٹیم کے ہیڈ کوچ گیر ی کرسٹن نے آئرلینڈ کے 107 رن کا ہدف 19 ویں اوور میں پورا کرنے پر کہا تھا کہ آپ بظاہر ٹیم لگتے ہیں لیکن حقیقت اس کے بلکل برعکس ہے، آپ میں اتحاد کی کمی ہے۔

ٹیگز :احتساباحمد شہزادقومی کرکٹ ٹیم