آئین پاکستان کے تحت بجلی کے شعبے کے وفاقی اداروں میں صوبوں کونمائندگی دی جائے

  آئین پاکستان کے تحت بجلی کے شعبے کے وفاقی اداروں میں صوبوں کونمائندگی دی جائے۔ سندھ کے وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ کا وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان کو مراسلہ کراچی 22 دسمبر : سندھ کے وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ نے وفاقی وزیر توانائی عمر ایوب خان کو گذشتہ روز لکھے گئے اپنے ایک مراسلے میں مطالبہ کیا ہے کہ بجلی کے شعبے میں موجود تمام وفاقی اداروں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز ، بورڈ آف گورنرز یا مینجمنٹ کمیٹیوںمیں صوبوں کو نمائندگی دی جائے۔اپنے خط میں وزیر توانائی سندھ نے لکھا ہے کہ 18ویں ترمیم کے بعد آئین کے آرٹیکل 154(1) کو فیڈرل لیجسلیٹو لسٹ حصہ دوئم کی انٹڑی نمبر 4 کے ساتھ پڑھنے سے یہ واضح ہے کہ بجلی کے وفاقی اداروں کی پالیسی سازی، نگرانی اور کنٹرول کا اختیار مشترکہ مفادات کی کونسل( CCI) کو حاصل ہے۔اور اسی طرح مشترکہ مفادات کی کونسل کویہ اختیار بھی حاصل ہے کہ وہ صوبائی حکومتوں کی سفارشات پر بجلی کے وفاقی اداروں کے بورڈ آف ڈائریکٹرز ، بورڈ آف گورنرز یا یا مینجمنٹ کمیٹیوںکے ارکان کی تقرری کر سکے ۔چنانچہ ضروری ہے کہ آئین پاکستان کی واضح شقوں کی روشنی میں بجلی کے وفاقی اداروں میں صوبائی حکومتوں کے نمائندوں کی تقرری کو یقینی بنایا جائے۔اپنے خط میں صوبائی وزیر توانائی امتیاز احمد شیخ نے امید ظاہر کی ہے کہ اس سلسلے میں فوری کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔  ہینڈآوٹ نمبر ۔۔ 1169 ایس اے این  

       

 
 

            

 

       

 

       

 
 

            

اپنا تبصرہ بھیجیں