عیدالضحیٰ پر پیٹ اور ہاضمے سمیت دیگر بیماریوں سے بچنے کیلئے گوشت احتیاط سے کھائیں۔ معدہ اور آنتوں کی بیماری سے بچنے کیلئے تیز مصالحہ والی خوراک سے پرہیز بہتر ہے جبکہ حاملہ خواتین کلیجی کھانے سے اجتناب برتیں۔


لاہور(مدثر قسیر)عیدالضحیٰ پر پیٹ اور ہاضمے سمیت دیگر بیماریوں سے بچنے کیلئے گوشت احتیاط سے کھائیں۔ معدہ اور آنتوں کی بیماری سے بچنے کیلئے تیز مصالحہ والی خوراک سے پرہیز بہتر ہے جبکہ حاملہ خواتین کلیجی کھانے سے اجتناب برتیں۔ لاہور جنرل ہسپتال کے اسسٹنٹ پروفیسر آف میڈیسن ڈاکٹر محمد مقصود،کنسلٹنٹ گائناکالوجسٹ ڈاکٹر لیلیٰ شفیق اور ڈاکٹر نادیہ ارشد نے عیدالضحیٰ کے حوالے سے احتیاطی تدابیر پیش کردیں۔ انہوں نے شہریوں سے کہا کہ ذیادہ گوشت کھانے سے بیمار ہو سکتے ہیں، معمول سے ذیادہ گوشت کھانے سے پیٹ درد، آنتڑیوں،یورک ایسڈ، گھنٹیا، بلڈ پریشر اور کولیسٹرول بڑھ جاتا ہے۔ امراض قلب، ذیابیطس کے مریض گردے، مغز، سری پائے اور کلیجی سے پرہیز کریں۔ ہمیشہ اعتدال میں کھائیں، فٹ اور صحتمند رہیں۔ ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ ڈینگی، ٹائیفائیڈ اور گیسٹرو کا سیزن بھی ہے، لہذا شہریوں کو دوہری احتیاط سے کام لیناچاہئے۔ انہوں نے کہا کہ گوشت فریزر میں رکھنے کی بجائے مستحق افراد میں تقسیم کیا جائے اس گرم مرطوب موسم میں بیکٹیریا پھیلنے کا اندیشہ ہوتا ہے۔ طبی ماہرین کا کہنا تھا کہ جانور تبدرست اور صحتمند خریدنا چاہئے اور اسے اسلامی طریقے سے ذبح کرنے اور گوشت کو مناسب وقت رکھنے کے بعد پکانا چاہئے۔ ڈاکٹرز نے مزید کہا کہ نظام انہضام اور جگر کے مر ض میں مبتلا افراد کو گوشت خوری زیادہ اعتدال برتنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ ذیابیطس کے مرض میں مبتلا افراد میٹھی اشیاء سے دور رہے ہیں اور عید کے موقع پر کم سے کم گوشت کھائیں تاکہ ان کے معدے پر ذیادہ بوجھ نہ پڑے۔ شہری تھوڑی سی احتیاط کر کے عید کی خوشیاں ہسپتال کی بجائے اپنے عزیز و اوقارب کے ساتھ منا سکتے ہیں۔ ڈاکٹرز نے واضح کیا کہ موسم کی شدت اور بجلی کی لوڈ شیڈنگ سے فریزر میں رکھا گیا گوشت خراب ہونے کے امکانات ہوتے ہیں جسے کھانے سے انسانی جسم میں قوت مدافعت کم ہو سکتی ہے اور طاقت ملنے کی بجائے بیماریاں گلے پڑ سکتی ہیں، لہذا ہم سب کو ذیادہ سے ذیادہ احتیاط سے کام لینا ہوگا۔
=======================

میکڈونلڈز میں ہنگامہ آرائی، مظاہرین کے خلاف دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ

اسلام آباد پولیس نے جمعے کی رات ایف نائن پارک میں موجود غیرملکی فاسٹ فوڈ چین میکڈونلڈز میں احتجاج کرنے والے مظاہرین کے خلاف دہشت گردی کی دفعات کے تحت مقدمہ درج کر لیا ہے۔
پولیس کی جانب سے سے درج کیے گئے مقدمے میں کہا گیا ہے کہ گذشتہ رات مسلح مظاہرین نے اپنے احتجاجی مظاہرے کے دوران خواتین کو زدوکوب کیا اور پولیس پر فائرنگ کی۔
’مظاہرین نے ڈنڈے، راڈ اور پتھر اٹھا کر میکڈونلڈ کے داخلی راستے کو بند کر کے نعرے بازی کی۔مسلح مظاہرین پولیس پر حملہ آور بھی ہوئے اور اسلحہ بھی چھین لیا۔
پولیس کی مدعیت میں درج کیے گئے مقدمے میں مزید بتایا گیا کہ مظاہرین نے احتجاج کے دوران پولیس کی وردیاں پھاڑ دیں اور اہلکاروں پر سیدھے فائر بھی کیے۔
واضح رہے کہ احتجاجی مظاہرین غزہ کے متاثرین سے اظہار یکجہتی کے لیے فاسٹ فوڈ چین کے بائیکاٹ کا مطالبہ کر رہے تھے۔
ڈنڈوں سے حملے کے نتیجے میں ایس پی پولیس زخمی ہوئے: مقدمہ
پولیس کا کہنا ہے کہ مظاہرے میں پولیس کے ایس پی سٹی زون خان زیب زخمی ہو گئے جنہیں فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا گیا۔
پولیس پر فائرنگ کرنے والے مظاہرین جنگل کے راستے فرار ہوئے: مقدمہ متن
اسلام آباد پولیس کے مطابق مظاہرین پولیس پر فائرنگ کرنے کے بعد جنگل کے راستے فرار ہو گئے جبکہ مظاہرین کی جانب سے میکڈونلڈز کے اندر موجود سٹاف کو حبس بے جا میں بھی رکھا گیا۔
واقعے کے بعد اسلام آباد پولیس کے ترجمان تقی جواد نے اپنے بیان میں کہا کہ میکڈونلڈز میں احتجاج کرنے پر شہریوں نے پولیس ہیلپ لائن 15 پر کال کی۔

پولیس ترجمان نے بتایا کہ ’کال موصول ہونے کے ردعمل میں ایس پی سٹی خان زیب پولیس ٹیم کے ہمراہ موقع پر پہنچے۔ اسلام آباد میں دفعہ 144 نافذ ہونے کی وجہ سے مظاہرین کو منتشر ہونے کا کہا گیا، تاہم انہوں نے پولیس پر حملہ کر دیا۔‘
پولیس ایف آئی آر بے بنیاد اور جھوٹ کا پلندہ ہے: ترجمان جماعت اسلامی
اسلام آباد پولیس کی جانب سے میکڈونلڈز کے باہر احتجاجی مظاہرہ کرنے والی طلبہ تنظیم کے کارکنوں کے خلاف درج مقدمے کی جماعت اسلامی نے مذمت کی ہے۔
جماعت اسلامی اسلام آباد کے ترجمان عامر بلوچ کا کہنا ہے کہ پُرامن طلبہ کے خلاف دہشت گردی کی دفعات بھونڈا مذاق ہے جبکہ ایف آئی آر پولیس کے اپنے موقف کے بھی خلاف ہے۔
انہوں نے کہا کہ اسلام آباد پولیس خواتین کو ہراساں کرنے، اسلحہ رکھنے اور فائرنگ کرنے کے ثبوت سامنے لائے۔ پولیس کی جانب سے طلبہ پر تشدد کے بے بنیاد الزامات سمجھ سے بالاتر ہیں۔