ایک برس کے دوران ڈالر کی قیمت میں ہوشربا اضافہ ہوا

ایک برس کے دوران ڈالر کی قیمت میں ہوشربا اضافہ ہوا، سال 2019 کے دوران امریکی کرنسی کی قیمت 139 سے بڑھ کر 164 روپے کی سطح پر پہنچی، روپے کی بے قدری سے ملک میں مہنگائی کا طوفان آیا۔ تفصیلات کے مطابق سال 2019 اپنے اختتام کی جانب سے گامزن ہے۔ سال 2019 پاکستان کیلئے معاشی طور پر ایک مشکل سال ثابت ہوا۔ 2019 کے دوران ملکی معیشت شدید مشکلات کا شکار رہی۔
رواں برس کے دوران ملکی معیشت کیلئے سب سے تباہ کن خبر ڈالر کی قیمت میں ہوشربا اضافے کی رہی۔ ایک ہی برس کے دوران ڈالر کی قیمت میں 25 روپے تک کا اضافہ ہوا۔ پورے سال کے دوران روپے کے مقابلے میں ڈالر 139 روپے سے بڑھ کر ملکی تاریخ کی بلندترین سطح 164 روپے 25 پیسے کی سطح پر پہنچا۔ تاہم بعد ازاں زرمبادلہ ذخائر میں اضافے اور امپورٹس میں کمی کے باعث کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت میں کمی ہوئی۔
اس وقت کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قیمت 154 روپے سے کچھ زائد کی سطح پر ہے۔ 2019 میں جہاں ڈالر کی قیمت میں اضافہ ہوا، وہیں دیگر کرنسیاں بھی مہنگی ہوئیں۔ یورو 159 روپے 80 پیسے سے بڑھ کر 172 روپے 20 پیسے، پاونڈ 177 روپے 30 پیسے بڑھ 201 روپے 90 پیسے، سعودی ریال اس عرصے میں 37 روپے 10 پیسے کے بجائے اب 41 روپے 30 پیسے، یو اے ای درہم 38 روپے 10 پیسے سے بڑھ کر 42 روپے 25 پیسے کا ہوگیا آسٹریلوی ڈالر جو 31 دسمبر 2018 کو 98 روپے 50 پیسے کا مل رہا تھا اب 107 روپے کا ہوگیا، کینیڈین ڈالر اس عرصے میں 102 روپے 50 پیسے سے بڑھ کر 118 روپے 30 پیسے، دوست ملک چین کی کرنسی 20 روپے 80 پیسے بڑھ کر 22 روپے 90 پیسے اور ایک سال کے دوران بھارتی روپیہ 10 پیسے اضافے سے 2 روپے 10 پیسے اور بنگلا دیشی ٹکہ 1 روپے 75 پیسے بڑھ کر 1 روپے 85 پیسے کا ہو گیا