ہر گھنٹے کے دوران ایک شخص سر اور گردن کے کینسر کے نتیجے میں ہلاک ہو جاتا ہے


ہیڈ اینڈ نیک کے کینسرز پاکستان خصوصا کراچی میں تیزی سے پھیل رہےہیں
کراچی :ڈاکٹر رتھ کے ایم فاؤ سول ہسپتال کراچی کےمیڈیکل سپرینٹنڈنٹ ڈاکٹر خالد بخاری نے کہا کہ سول اسپتال میں سر اور گردن کے سرطان کے روزانہ دو سے تین مریض آتے ہیں۔ ہیڈ اینڈ نیک کے کینسرز پاکستان خصوصا کراچی میں تیزی سے پھیل رہےہیں
دنیا بھر میں ہر گھنٹے کے دوران ایک شخص سر اور گردن کے کینسر کے نتیجے میں ہلاک ہو جاتا ہے۔یہ باتیں انہوں نے سول اسپتال شعبہ ای این ٹی یونٹ ٹو ، ڈاو میڈیکل کالج اور ٹیومر بورڈ اسٹیبلشمنٹ فیسیلٹیشن فورم (ٹیف ) کے اشتراک سے منعقدہ ہیڈ اینڈ نیک کینسر آگہی مہم کے افتتاحی سیشن سے بہ طور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کہیں۔ افتتاحی سیشن سے ای این ٹی ڈپارٹمنٹ کے سابق سربراہ پروفیسر شجاع فرخ،ای این ٹی یونٹ ون کی ہیڈ پروفیسر زیبا احمد،ای این ٹی یونٹ ٹو کی سربراہ پروفیسر صدف ضیاء اور ٹیف کی صدر ڈاکٹر نمرتا کماری نے بھی خطاب کیا اس موقع پر ڈاکٹرز و پیرامیڈیکل اسٹاف کی بڑی تعداد بھی موجود تھی۔ ڈاکٹر خالد بخاری نے کہا کہ سول اسپتال میں بڑی تعداد میں مریض آتے ہیں اور سرطان کے مریض آخری مرحلے پر ہی یہاں پہنچتے ہیں ضرورت اس امر کی ہے کہ جنرل پریکٹیشنر سمیت شہر کے نواحی علاقوں میں چھوٹے رفاہی اسپتالوں میں آگہی مہم چلائی جائے تاکہ مریضوں کی درست رہنمائی کر کے تشخیص و علاج پر توجہ مرکوز رکھی جا سکے کیونکہ سول اسپتال یا کسی بڑے اسپتال کے سیٹ اپ تک پہنچنے تک مریض ناقابل علاج ہو جاتا ہے۔ پروفیسر شجاع فرخ نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ دنیا میں ہر قسم کے کینسر میں سر اور گردن کے کینسر کی شرح چار تا پانچ فیصد ہے ہمارے یہاں سول اسپتال میں آنے والے کینسر کے مریضوں میں 10 تا 15 فیصد سر اور گردن کے سرطان کے مریض آتے ہیں لیکن لوگوں کی اس مرض کے خطرات سے عدم واقفیت کا یہ عالم ہے کہ کینسر کے چوتھے مرحلے کے مریض کو لے کر آنے والے تیماردار شخص چاہےوہ بیٹا ہو یا بھائی منہ میں پان، چھالیہ ، گٹکااور نسوارجیسا زہر لے کر آتا ہے اوراسے اس بات کااحساس تک نہیں ہوتا کہ اس مریض کی موت کے دہانے تک پہنچنے کی وجہ یہی زہر ہے جو اس کے منہ میں موجود ہے۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ شعور و آگاہی پھیلائی جائے۔ انہوں نے آگاہی مہم کا آغاز کرنے پر ٹیف کی تعریف کی اور کہا کہ سول اسپتال میں آنے والے بعض مریضوں کے بارے میں ہم بالکل بے بس ہو جاتے ہیں حالانکہ اس سے پہلے سرجری، ریڈیو سرجری،ریڈیشن تھراپی،کیمو تھراپی اور امیونو تھراپی سمیت اور بھی راستے ہوتے ہیں جن کے ذریعے مریض کو فائدہ ہو سکتا ہے۔ ڈاکٹرصدف ضیاء نے کہا کہ سر اور گردن کے سرطان میں رسک فیکٹریا خطرے کے عوامل سگریٹ یا تمباکو نوشی، پان ،چھالیا، نسوار گٹکا ،شراب نوشی، خراب خوراک،حفظان صحت کے اصولوں کے برخلاف رہن سہن وغیرہ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اگر ناک بہے سانس لینے، چبانے یا نگلنے میں پریشانی ہو،آواز میں تبدیلی اور گلے میں سوزش, گردن یا منہ میں بے درد گانٹھ ہو،منہ پہ سفید یا سرخ نشان ہوں تو فوری طور پر ڈاکٹر سے رجوع کیا جائے اور تمام ٹیسٹ کرائے جائیں ڈاکٹر زیبا احمد نے کہا کہ منہ کا کینسر زندگی کو خطرات میں مبتلا کر دیتا ہے لیکن اس کی بروقت تشخیص ہونے سے زندگی بچائی جا سکتی ہے یہ اسی صورت میں ممکن ہے جب مریض یا اس کے قریبی افراد کو اس کا شعور ہو اور وہ اس بیماری یا کسی بھی بیماری کے متعلق معلومات رکھیں تو ہم بروقت تشخیص اوراچھی نگہداشت کے ذریعے زندگی بچا سکتے ہیں۔ کینسر کے تیسرے یا چوتھے مرحلے میں کچھ ریلیف تو فراہم کیا جا سکتا ہے لیکن زندگی بچانا ممکن نہیں ہوتا۔انہوں نے کہا کہ امراض کے بارے میں شعور و آگاہی پھیلانا ڈاکٹرز کے ساتھ ساتھ پیرا میڈیکل سٹاف کی بھی ذمہ داری ہے۔انہوں نے ٹیف کی جانب سے سراور گردن کے کینسر کی آگاہی مہم پہ اظہار مسرت کیا اور زور دیا کہ وقتا فوقتا بیماریوں کے بارے میں آگاہی مہم کا انعقاد ہوتے رہنا چاہیے۔ ٹیف کی سربراہ ڈاکٹر نمرتا کماری نے کہا کہ کینسر کی آگاہی مہم باقاعدگی سے چلاتے ہیں ،ای این ٹی کے علاوہ پیڈیاٹرک، آنکولوجی، کالوریکٹل ،بریسٹ ،گائنی امبڈیزاوردیگر کینسر کے حوالے سےآگاہی مہم چلاتے ہیں۔ قبل ازیں ڈاکٹر خالد بخاری نے ربن کاٹ کرآگاہی مہم کا افتتاح کیا بعد ازاں کیک بھی کاٹا گیا۔
پاکستان خصوصاً کراچی میں سر اور گردن کے سرطان تیزی سے پھیل رہےہیں ،ڈاکٹر خادم بخاری
دنیا بھر میں ہر گھنٹے کے دوران سر اور گردن کے کینسر سے ایک ہلاکت ہوتی ہے ڈاکٹر خالد بخاری
سول اسپتال میں کینسر کے مریض آخری مرحلے پر پہنچتے ہیں، ڈاکٹر خالد بخاری

کینسر کے مریضوں کی درست رہنمائی کے لیے آگاہی مہم چلائی جائے ،ڈاکٹر خالد بخاری
دنیا میں ہر قسم کے کینسر میں سر اور گردن کے کینسر کی شرح چار تا پانچ فیصد ہے پروفیسر شجاع فرخ
سول اسپتال میں آنے والے کینسر کے مریضوں میں 10 سے 15 فیصد سر اور گردن کے کینسر کی ہے پروفیسر شجاع فرخ

سول اسپتال میں کینسرآگاہی مہم میں ڈاکٹرز اور پیرا میڈیکل سٹاف کی بڑی تعداد موجود

ڈاکٹر رتھ فاؤ سول اسپتال میں شعبہ ای این ٹی ڈاؤ میڈیکل کالج اور ٹیومر بورڈ اسٹیبلشمنٹ فیسلیٹیشن فورم کے اشتراک سے سر اور گردن کے کینسرکی آگاہی مہم کا انعقاد