کراچی ٹیسٹ، آدھی مہمان ٹیم پویلین روانہ

کراچی کے نیشنل اسٹیڈیم میں دوسرے دن کا کھیل جاری ہے اور میزبان پاکستان کے خلاف مہمان ٹیم سری لنکا کی آدھی سے زیادہ ٹیم پویلین لوٹ چکی ہے۔

پاک سری لنکا ٹیسٹ سیریز کے دوسرے دن کے کھیل کا آغاز سری لنکا نے 64 رنز3 کھلاڑی آؤٹ سے کیا تو اینجلو میتھیوز کےساتھ نائٹ واچ مین لاستھ ایمبل دینیا کے ساتھ کریز پر موجود تھے۔

نائٹ واچ مین ایمبل دینیا 78 کے مجموعی اسکور پر 13 رنز بنا کر عباس کا شکار ہوئے، ٹیم کا سکور 80 رنز ہوا تو اینجلو میتھیوز بھی 13 رنز بنا کر پویلین لوٹ گئے۔

سری لنکا کی چھٹی وکٹ ڈی سلوا کی تھی جو 147 کے مجموعی اسکور پر 32 رنز بناکر آؤٹ ہوئے۔

سری لنکا نے پاکستان کے 191 رنز کے جواب میں ابھی تک 6 وکٹ کے نقصان پر 147 رنز بنالیے ہیں اور اس کی 4 وکٹیں ابھی باقی ہیں۔
اس سے قبل گزشتہ روز ٹیسٹ کے پہلے دن بولرز کا راج رہا اور 13وکٹیں گریں جبکہ بیٹسمین 255رنز بنانے میں کامیاب ہوئے، دن کے آخری سیشن میں 8وکٹیں گریں۔

آسٹریلیا کی شرم ناک بیٹنگ کارکردگی کے بعد پاکستانی بیٹنگ نے ہوم گرائونڈ پر بھی بری طرح ناکام ہو کر منہ کے بل گر پڑی، دوسرے ٹیسٹ کے پہلے دن پاکستانی ٹیم 191رنز بناکر شائقین کرکٹ کو ایک بار پھر دھوکا دے گئی، نیشنل اسٹیڈیم میں پاکستان کا یہ چوتھا سب سے کم اسکور ہے۔

گزشتہ روز پاکستان کی جانب سے اظہر علی، یاسر شاہ اور محمد عباس بغیر کوئی رن بنائے آئوٹ ہوئے، جبکہ 7 بیٹسمین ڈبل فیگر میں داخل نہ ہوسکے۔

نیشنل اسٹیڈیم کراچی میں جمعرات کو اظہر علی نے ٹاس جیت کر پہلے بیٹنگ کرنے کا فیصلہ کیا جس کے بعد پہلے سیشن میں 3 وکٹ گرے جبکہ چائے کے وقفے کے بعد اوپر تلے 5 کھلاڑی آئوٹ ہوئے۔

چائے کے وقفے کے بعد دوسری ہی گیند پر لہیرو کمارا نے لگاتار دو گیندوں پر محمد رضوان اور پھر یاسر کو آؤٹ کر کے پاکستان کو 7وکٹوں سے محروم کردیا جبکہ محمد عباس بھی کوئی رنز نہ بنا سکے۔

ایک موقع پر پاکستان کے 4 وکٹ164رنز پر گرے تھے۔ اظہر علی کا آخری13اننگز میں12 کا بیٹنگ اوسط ہے جبکہ 9اننگز میں وہ ڈبل فیگرحاصل کرنے میں بھی ناکام رہے ہیں۔

قومی ٹیم کے آؤٹ ہونے والے پہلے 2 کھلاڑی شان مسعود اور کپتان اظہر علی تھے جنھیں وشوا فرنینڈو نے ایک ہی اوور میں بولڈ کیا، سب سے زیادہ63رنز اسد شفیق نے بنائے، وہ پل شاٹ کھیلنے کی کوشش میں کیچ آئوٹ ہوئے۔

بابر اعظم اچھا کھیلتے کھیلتے اسٹمپڈ ہوگئے، انہوں نے96گیندوں پر60رنز اسکور کئے ان کی اننگز میں ایک چھکا اور 6 چوکے شامل تھے، عابد علی نے ایک چھکے اور 7 چوکوں کی مدد سے 38 رنز 66 گیندوں پر بنائے۔

بابر اعظم نے اسد شفیق کے ہمراہ 62رنز کی پارٹنرشپ دی جبکہ اسد شفیق اور حارث سہیل کے درمیان40رنز کی شراکت قائم ہوئی جس میں حارث کا حصہ9 رنز کا تھا۔

سری لنکا کی طرف سے لاہیرو کمارا اور لستھ ایمبل دینیا نے چار، چار وکٹیں حاصل کیں۔ لاہیرو کمارا کی چار وکٹوں میں اسد شفیق، عابد علی، محمد رضوان اور یاسر شاہ شامل ہیں۔

کراچی ٹیسٹ میں پاکستان نے ٹیم میں صرف ایک تبدیلی کی ، یاسر شاہ کو عثمان شنواری کی جگہ ٹیم میں شامل کیا گیا جبکہ سری لنکا نے بھی ایک تبدیلی کی اور ٹیم میں لاستھ ایمبل دینیا کوموقع دیا گیا۔

پہلے روز کھیل ختم ہونے پر سری لنکا نےتین وکٹ پر64رنز بنائے تھے۔ پاکستان کا اسکور برابر کرنے کے لئے اسے مزید127رنز کی ضرورت تھی۔

فرینڈو کی وکٹ شاہین شاہ آفریدی کے حصے میں آئی جبکہ کپتان کرونا رتنے اورکوشال مینڈس محمد عباس کا شکار بنے