ادویات میں جعل سازی کے خاتمے کے لیے کارروائیوں کا دائرہ کار مزید وسیع

سیکرٹری پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیر کی پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ساتھ مشترکہ حکمت عملی ترتیبنیو ٹراسوئٹیکل یا سپلیمنٹ کے نام پر بننے والی ادویات کے خاتمے کے لیے فوڈ اتھارٹی کے ساتھ مشترکہ کارروائیاں ہوں گی۔فنکشنل فوڈ ز یا نیو ٹراسوئٹیکل پنجاب فوڈ اتھارٹی کے دائرہ کار میں آتے ہیں۔سیکرٹری پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیرقانونی پہلو مکمل کر کے بہت جلد صوبہ بھر میں سرپرائزگرینڈ آ پریشن لانچ کر یں گے۔کیپٹن(ر)محمد عثمانلاہور19دسمبر:سیکرٹری پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیر کیپٹن(ر)محمد عثمان نے ادویات میں جعل سازی کے خاتمے کیلئے کارروائیوں کا دائرہ کار مزید وسیع کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔تفصیلات کے مطابق جعل سازی کے خاتمے کے لیے پنجاب فوڈ اتھارٹی کے ساتھ مشترکہ حکمت عملی ترتیب دے دی گئی ہے۔اس حوالے سے سیکرٹری پرائمری اینڈ سکینڈری ہیلتھ کئیر کا کہنا تھا کہ نیو ٹراسوئٹیکل یا سپلیمنٹ کے نام پر بننے والی ادویات کے خاتمے کے لیے فوڈ اتھارٹی کے ساتھ مشترکہ کارروائیاں ہوں گی۔فنکشنل فوڈ ز یا نیو ٹراسوئٹیکل پنجاب فوڈ اتھارٹی کے دائرہ کار میں آتے ہیں۔جو ادویات ڈرگ ایکٹ میں شامل نہیں وہ فوڈ اتھارٹی کے ہی دائرہ کار میں آتی ہیں۔کیپٹن(ر)محمد عثمان کا مزید کہنا تھا کہ سٹینڈنگ کمیٹی کی آٹھویں میٹنگ میں پنجاب فوڈ اتھارٹی کو فوڈ اینڈ ڈ رگ اتھارٹی بنانے کی منظوری دی جا چکی ہے۔مارکیٹ میں زیادہ تر جعلی ادویات بنانے والے ڈرگ ایکٹ سے بچنے کے لیے نیو ٹراسوئٹیکل یا فنکشنل فوڈز کے نام سے کام کرتے ہیں۔فوڈ اتھارٹی اور پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر کی مشترکہ کارروائیوں سے جعل سازوں کا خاتمہ کرنے میں مدد ملے گی۔انہوں نے واضح کیا کہ قانونی پہلو مکمل کر کے بہت جلد صوبہ بھر میں سرپرائزگرینڈ آ پریشن لانچ کر یں گے۔                                           

اپنا تبصرہ بھیجیں