قائداعظم محمد علی جناح سے اپنی عقیدت و محبت کو کمزور نہ پڑنے دیجئے

”قائداعظم محمد علی جناح سے اپنی عقیدت و محبت کو کمزور نہ پڑنے دیجئے یہ پاکستانی قوم کے اتحاد و یکجہتی اور جذبہ حب الوطنی کو مہمیز دینے کاباعث  بنتی ہے“۔ ہمدرد نونہال اسمبلی کراچی سے محترمہ سعدیہ راشد کا خطاب
ہمدرد فاﺅنڈیشن پاکستان کی صدر محترمہ سعدیہ راشد نے کہا ہے کہ بانی ¿ پاکستان قائداعظم محمد علی جناح سے اپنی عقیدت و محبت کو کمزور نہ پڑنے دیجئے ، یہ پاکستانی قوم کے اتحاد و یکجہتی اور جذبہ ¿ حب الوطنی کو فروغ دیتی ہے۔ وہ 17 دسمبر2019 کو”اے قائد اعظم ترا احسان ہے احسان“ کے موضوع پر ہمدرد نونہال اسمبلی کراچی کی تقریب، جو” 25 دسمبریوم قائد اعظم“ کو منانے کے لیے منعقد کی گئی، سے بیت الحکمہ آڈیٹوریم، مدینتہ الحکمہ میں خطاب کر رہی تھیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ 73 سال پہلے پاکستان دنیا کے نقشے پر موجود نہیں تھا، بلکہ علامہ اقبال کا ایک خواب تھا جسے قائداعظم محمد علی جناح کی قابل، دوراندیش اور باکمال شخصیت نے سات سال کی مختصر مدت میں حقیقت کا روپ دے کر ہمیں ایک آزاد مملکت اور آزادی کی نعمت عطا کی۔ اس لیے ہم ان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہتے ہیں : اے قائداعظم ترا احسان ہے احسان۔ انہوں نے کہا کہ قائداعظم محمد علی جناح کی بے مثال قیادت میں ہمیں آزادی بڑی قربانیوں کے بعد ملی ہے۔ آزادی ایک غیرمعمولی نعمت ہے، آزادی کی قدر ان لوگوں سے پوچھیے جو دنیا میں آج بھی دربدری اور غریب الوطنی کا دکھ جھیل رہے ہیں۔ مثلاً برما، فلسطین، شام اور افغانستان سے ہجرت کرنے والے مسلمانوں سے پوچھیے کہ اپنا ملک کتنی بڑی نعمت ہے۔انہوں نے کہا کہ آپ نے ضرور سنا ہوگا کہ مقبوضہ کشمیر اور بھارت کے بہت سے علاقوں میں مسلمانوں پر زندگی اجیرن کر دی گئی ہے، ان پر طرح طرح کی ظم و زیادتی کی جا رہی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ذرا سوچیے کہ پاکستان کی وجہ سے ہم ان اذیتوں سے محفوظ ہیں، پاکستان نے ابھی تک ترقی و خوشحالی کی وہ منزل حاصل نہیں کی جس کا خواب قائداعظم محمد علی جناح نے دیکھا تھا، یہ بات تشویش ناک ضرور ہے تاہم مایوس ہونے کی ضرورت نہیں۔ شہید پاکستان حکیم محمد سعید کو قوی امید تھی کہ پاکستان کے نونہال خوب پڑھنے لکھنے کے بعد جب اس ملک کی قیادت سنبھالیں گے تو یہ ملک خوب ترقی کرے گا۔ انہوں نے بچوں سے کہا لہٰذا نہیں اب توجہ کے ساتھ خوب پڑھ لکھ کر شہید حکیم محمد سعید کی امید پر پورا اترنا ہے اور قائداعظم محمد علی جناح کے خواب کو پورا کرنا ہے۔ ہمدرد کے ڈائریکٹر پروگرامز اور پبلی کیشنز سلیم مغل نے اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناح کا قد برصغیر کے تمام سیاسی رہنماﺅں سے زیادہ بلند تھا۔ ان کی زندگی کو ہمیں پڑھنا اور ان سے بہت کچھ سیکھنا چاہیے۔ وہ تاریخ کے اتنے بلند مقام پر فائز ہوچکے ہیں کہ ان کا دن منانے سے ان کی عظیم شخصیت پر کوئی فرق نہیں پڑتا لیکن ہم ان کا دن اس لیے مناتے ہیں تاکہ ان کے پیغام کو ہم یاد رکھیں، ہم دیگر قومی شخصیات کے دن بھی اسی لیے مناتے ہیں تاکہ ان کے پیغامات ہم بھول نہ جائیں کیونکہ ان کے اصولوں اور پیغامات کی پیروی کر کے ہی ہم ترقی و خوشحالی کی اپنی منزل حاصل کر سکتے ہیں۔ انہوں نے مزیدکہا کہ ہمدرد نونہال اسمبلی کے اجلاسوں میں ہم ایسی چنیدہ شخصیات کو بلاتے ہیں جو قومی خدمات کا ریکارڈ رکھتی ہیں تاکہ بچے ان سے تحریک پاکر ان جیسا بننے کی کوشش کریں۔ مثلاً آج کے اجلاس کے مہمان خصوصی لیفٹینینٹ جنرل ایس پی شاہد تھے، جو اچانک ناسازی طبع کے سبب نہ آسکے، وہ پاکستان کے سابق کورکمانڈر اور وہ واحد شخص ہیں جو ملک کے چیف اسکاﺅٹ رہے ورنہ یہ عہدہ صرف صدر مملکت کے پاس ہوتا ہے۔ نونہال مقررین بسمہ اقبال، عثمان راشد، فاطمہ حیات، اویس احمد، علیشا بتول، عائشہ حنیف، جائشہ احمر اور عائشہ خان نے بھی خطاب کیا اور قائد اعظم محمد علی جناح کو زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے کہا کہ قائد اعظم محمد علی جناح نے چومکھی لڑائی لڑی اور تخلیقِ پاکستان کی جنگ جیت لی، ہم اس ملک کو ان کی خواہش کے مطابق عظیم سے عظیم تر بنائیں گے اور ماضی کی غلطیاں ہرگز نہیں دہرائیں گے۔ ملی نغمہ دی میپ اسکولنگ سسٹم لیاری کے طلبہ نے، منظوم خراج عقیدت یونیک اسٹار انگلش اسکول کی سعدیہ عمران، ٹیبلو پی ان جی سیکنڈری اسکول اور دعائے سعید ہمدرد پبلک اسکول اور ہمدرد ولیج اسکول کے طلبہ نے پیش کی۔ نظامت کے فرائض زارا وسیم نے ادا کیے۔ تقریب میں مہمانان، والدین، اساتذہ ، طلبہ اور بچوں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں