ڈی آئی جی ٹریفک جاوید مہر کی صوبائی پبلک سیفٹی اینڈ پولیس کمپلینٹس کمیشن کے اجلاس میں بریفنگ

کراچی میں ٹریفک کے مسائل

* ڈی آئی جی ٹریفک جاوید مہر کی صوبائی پبلک سیفٹی اینڈ پولیس کمپلینٹس کمیشن کے اجلاس میں بریفنگ

* شہر کراچی 3527 کلومیٹر پر محیط ہے جس میں 1000 کلومیٹر سڑکوں کا جال بچھا ہوا ہے

* شہر کی آباد ی 16 ملین ہے اور 53 لاکھ سے زیادہ گاڑیاں ہیں جن میں 65 فیصد بائیکس ہیں

* ڈی آئی جی ٹریفک، 8 ایس ایس پیز ٹریفک پولیس میں کام کررہے ہیں

* 76 کروڑ روپے کا چالان عائد کیے ہیں

* 32859 فینسی نمبر پلیٹس کے خلاف کارروائی کی ہے

* 4763 سی این جی ٹینک کے خلاف کارروائی کی گئی

* 31276 سگنلز کی خلاف ورزی کے خلاف کارروائی کی گئی، 75375 بغیر لائسنس کے ڈرائیو کےچالان کئے

* 227 ملین روپے کیش ایوارڈ کیلئے سندھ حکومت نے ٹریفک پولیس کو اسی سال دئے ہیں

* سندھ حکومت کل ٹریفک کے چالان کی رقم 50 فیصد ٹریفک والوں کانقد انعام ہے اور 50 فیصد مشینری اور سازوسامان کی خریداری پر خرچ ہوتا ہے

* شہر میں 91 سڑکین خراب ہیں جن کی مرمت کرنے کی ضرورت ہے

* 147 سڑکوں پر لائن مارکنگ، اسٹوپ لائن، زیبرا کراسنگ بنانے کا فیصلہ

* 178 جگہوں پر ٹریفک سگنلز بورڈ لگانے کا فیصلہ

* لائن ایریا پارکنگ پلازہ اور بارا دری انڈرگرائونڈ پارکنگ کیلئے عوام کو آگاہی دینے کی تجویز

* جن شاپنگ سینٹرز نے اپنی پارکنگ جگہوں میں دکانیں بنائی ہیں انکو نوٹس دینے کا فیصلہ

* پارکنگ ایریاز پارکنگ کیلئے استعمال کرنے کی ہدایت

* جی پی او کے قریب ریلوے گرائونڈ، کشمیر روڈ پر چائنہ گرائونڈ پر پارکنگ کی فیسلٹی بنانے کی تجویز

* شہر میں 33 مقامات پر ترقیاتی کام جاری ہونے کی وجہ سے بھی ٹریفک مسائل ہوتے ہیں

* 52 سڑکوں پر تجاوزات ہیں جس میں 97 ایف آئی آر اور 341 لوگوں کو گرفتار بھی کیا گیا ہے

* 159 سگنلز کراچی میں ہیں جن میں 57 ڈی ایچ اے، ایک این ایچ اے میں ہیں

* 158 سگنلز میں33 سگنلز خراب ہیں جن کی مرمت کرنے کی ضرورت ہے

* خالد بن ولید روڈ اور دیگر علاقوں میں جہاں فٹ پاتھ اور لائنز پر شو رومز والے گاڑیاں کھڑی کرتے ہیں انکے خلاف کارروائی کرنے کی ہدایت

عبدالرشید چنا
میڈیا کنسلٹنٹ وزیراعلیٰ سندھ