چین نے سلامتی کونسل میں مسئلہ کشمیر اٹھا دیا

چین نے پاکستانی وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی کے خط کو بنیاد بناکر سلامتی کونسل میں کشمیر پر تفصیلی بریفنگ طلب کرلی، سلامتی کونسل میں بھارتی جارحیت پر تبادلہ خیال ہوگا۔

غیر ملکی خبررساں ادارے کے مطابق سلامتی کونسل میں بریفنگ لائن آف کنٹرول کی نگرانی کرنے والا اقوام متحدہ کا مبصر مشن دے گا، چین نے پاکستانی وزیر خارجہ کے خط کو بنیاد بناکر سلامتی کونسل میں کشمیر پر تفصیلی بریفنگ طلب کی ہے۔

ادھر پاکستان کا کہنا ہے کہ ایل او سی کی نگرانی بڑھائی جائے تاکہ جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کو روکا جاسکے، حالیہ دنوں میں ایل او سی پر جارحانہ بھارتی اقدامات سے امن کو خطرات ہیں۔

وزیرخارجہ شاہ محمود قریشی کا کہنا تھا کہ بھارت نے کشمیر میں 4ماہ سے ظلم وبربریت کا نیاباب رقم کیا ہے، سلامتی کونسل کشمیریوں کو حق خودارادیت دلانے میں کردار ادا کرے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ عالمی برادری بھارتی جارحیت کو روکے۔

مقبوضہ کشمیر میں بھارتی ریاستی دہشت گردی اور ظلم وبربریت کا سلسلہ تھم نہ سکا، وادی میں کرفیو اور لاک ڈاؤن 136ویں روز میں داخل ہوگیا۔ مقبوضہ کشمیر میں دکانیں، کاروبار، تعلیمی مراکز بند ہیں اور لوگ گھروں میں محصور ہو کر رہ گئے ہیں۔ مقبوضہ وادی میں نام نہاد سرچ آپریشن کی آڑ میں مظلوم اور نہتے کشمیریوں کے قتل کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

مقبوضہ کشمیر میں موبائل فون، انٹرنیٹ سروس بند اور ٹی وی نشریات معطل ہیں۔ مقبوضہ وادی میں کھانے پینے کی اشیا اور دواؤں کی قلت ہے، جامع مسجد کے اطراف رکاوٹیں لگائی گئی ہیں