ایکڑ رقبے پر مشتمل سرکاری اراضی پر قبضہ

صوبائی وزیر سہیل انور سیال کی ہدایت پر بدعنوانی کے خلاف کارروائیوں کا سلسلہ جاری اراضی اور گاڑیوں کی رجسٹریشن میں دھوکہ دہی اور گھپلوں کا معاملہ محکمہ ریونیو اور ایکسائز کے درجنوں افسران و آفیشلز کے خلاف پندرہ کیسز کا اندراج اینٹی کرپشن ایسٹ زون کی کارروائی 1ملزم گرفتار جبکہ ایک گاڑی برآمد مزید ملزمان کی تلاش اور گاڑیوں کی بازیابی کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں۔ڈپٹی ڈائریکٹر ایسٹ زون
 سندھ کے وزیر برائے انسداد بدعنوانی، آبپاشی اور زکوة و عشر سہیل انورسیال کی ہدایت پر کرپشن کے خلاف صوبے بھر میں کاروائیوں کا سلسلہ جاری ہے اس ضمن میں اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ایسٹ زون نے اراضی اور گاڑیوں کی رجسٹریشن میں دھوکادہی اور گھپلوں کے الزام میں محکمہ ریونیو اور محکمہ ایکسائز کے درجنوں افسران و آفیشلز کے خلاف پندرہ کیسز کا اندراج کرلیا ہے۔ڈپٹی ڈائریکٹر اینٹی کرپشن اسٹیبلشمنٹ ایسٹ زون ضمیر عباسی کے مطابق اینٹی کرپشن کمیٹی ون میں کیے گئے فیصلوں کے مطابق اے سی ای ای زون نے جعلسازی اور مجرمانہ اقدام کے ذریعے زمین اور گاڑیوں کے اندراج میں دھوکہ دہی کے الزام میں محکمہ ریونیو اور ایکسائز کے کءافسران و آفیشلز کے خلاف 15 کیسز رجسٹر ڈ کرکے ایف آئی آر کا اندراج کر لیا گیا ہے۔ڈی ڈی ایسٹ زون کے مطابق 211 ایکڑ رقبے پر مشتمل سرکاری اراضی پر قبضہ کرلیا گیا تھا جبکہ جعلی نیلامی کے کاغذات کی بنیاد پر 15 گاڑیاں غیر قانونی طور پر رجسٹرڈ کی گئی تھیں۔ اس ضمن میں چھاپہ مار کاروائیوں کا سلسلہ جاری ہے اور اور اینٹی کرپشن ایسٹ زون نے کارروائی کرتے ہوئے ایک ملزم محمد جمیل کو گرفتار کرلیا جبکہ ایک گاڑی رجسٹریشن نمبر 7870 ٹیوٹا سرف 2016 برآمد کرلی ہے۔ یہاں اس بات کا عندیہ دیا گیا ہے کہ ملزمان کو کیفرکردار تک پہنچانے کیلئے مزید چھاپہ مار کاروائی عمل میں لائی جائیگی ۔ ہینڈآوٹ نمبر ۔۔۔(1136 ) ایم کے

اپنا تبصرہ بھیجیں