بلیک میلنگ کا الزام، راحت فتح علی نے سابق مینیجر کیخلاف پرچہ کٹوا دیا


بلیک میلنگ کا الزام، راحت فتح علی نے سابق مینیجر کیخلاف پرچہ کٹوا دیا

نامور گلوکار راحت فتح علی خان نے اپنے سابق مینیجر سلمان احمد کیخلاف پرچہ کٹوا دیا ہے اور الزام عائد کیا کہ وہ انہیں بلیک میل کرتا ہے اور اُن کا یوٹیوب چینل غیر مجاز انداز سے استعمال کرتا ہے۔ راحت فتح علی خان نے یہ شکایت ایف آئی اے کرائم سرکل لاہور میں جمع کرائی ہے۔ ان کے ساتھ ان کے وکیل زین قریشی اور گلوکار وارث بیگ بھی موجود تھے۔۔ سلمان احمد نے الزامات سے انکار کیا ہے اور افسوس کا اظہار کیا ہے کہ دونوں کے درمیان 12؍ سالہ تعلق برے انداز سے ختم ہوا۔ اپنی شکایت میں راحت فتح علی خان کا کہنا ہے کہ اپنے پیشہ ورانہ کام اور دیگر پیشہ ورانہ معاملات کیلئے میں نے سلمان احمد ولد شیخ سلیم احمد کی خدمات حاصل کیں اور انہیں مینیجر مقرر کیا۔ اب سلمان احمد نے مجھے بلیک میل اور بدنام کرنا شروع کر دیا ہے اور مجھے دھمکیاں دے رہا ہے۔ اس نے مجھے دھمکی دی ہے کہ اس کے پاس میری ویڈیوز ہیں جنہیں وہ مجھے اور میرے خاندان کو نقصان پہنچانے کیلئے جاری کر دے گا۔ راحت فتح علی کا گزشتہ چند ہفتوں سے سلمان احمد سے تنازع چل رہا ہے۔ اب انہوں نے اعلان کیا کہ وہ ایک نئی ٹیم کے ساتھ کام کریں گے۔ سلمان احمد کی کمپنی پی ایم ای (پورٹ فولیو مینیجنگ ایونٹس) ورلڈ نے 12؍ سال راحت فتح علی کے شوز مینیج کیے اور دو ماہ قبل ہی یہ تعلق انجام کو پہنچا۔ جیسے ہی یہ تعلق ختم ہوا، راحت فتح علی کی ویڈیو منظر عام پر آئی جس میں وہ اپنے شاگرد کو مارتے ہوئے نظر آئے۔ راحت کی نئی مینجمنٹ ٹیم نے الزام عائد کیا ہے کہ یہ ویڈیو سلمان احمد نے خفیہ طور پر بنائی تھی اور راحت فتح علی خان کی شہرت کو نقصان پہنچانے کیلئے اسے میڈیا میں جاری کیا۔ راحت فتح علی خان نے الزام عائد کیا ہے کہ سلمان احمد نے غیر قانونی اور غیر مجاز انداز سے اُن کے یوٹیوب چینل کا کنٹرول حاصل کر لیا ہے جس کے تقریباً 80؍ لاکھ فالوئرز ہیں۔ شکایت میں کہا گیا ہے کہ ’’میں نے سلمان احمد کو یوٹیوب چینل بنانے کیلئے کہا تھا جس کا نام اُستاد راحت فتح علی خان تھا جس پر میں اپنے تازہ ترین گانے اور ویڈیوز جاری کرتا تھا۔ یوٹیوب چینل 2016ء میں بنایا گیا تھا لیکن بعد میں 2022ء میں سلمان احمد نے غیر قانونی طور پر اس کا لاگ ان اور یوٹیوب چینل کا نام تبدیل کر دیا۔ سلمان احمد مسلسل میرا امیج خراب کرنے کی کوشش کر رہا ہے اور غیر مجاز انداز سے میری شناخت استعمال کرکے پیسہ بنا رہا ہے۔ سلمان احمد کو قوالی کے شعبے میں میری کمرشل سرگرمیوں کا علم ہے، اس نے بڑی چالاکی سے مجرمانہ انداز سے میرا بھروسہ توڑا اور میرا یوٹیوب چینل ہتھیا لیا جس سے مجھے نقصان ہوا ہے اور میرے خلاف مذموم اور ہتک آمیز مہم چلائی گئی ہے۔ یوٹیوب چینل پر دستیاب ویڈیوز میرا کام ہیں اور انہیں سلمان احمد نے میری اجازت کے بغیر استعمال کیا ہے۔ وہ یوٹیوب کے ذریعے پیسے کمانے کیلئے غیر قانونی اور غیر مجاز طریقے سے میرے ڈیٹا اور ویڈیوز کو استعمال، کاپی، اپ لوڈ اور ٹرانسمٹ کر رہا ہے۔ سلمان احمد نے غلط فائدے کی نیت سے انفارمیشن سسٹم میں مداخلت کی اور میری نقالی کرکے لوگوں کو دھوکہ دینے کیلئے استعمال کیا جس سے میری ساکھ کو ناقابل تلافی نقصان پہنچا ہے۔ میری رضامندی کے بغیر میرا نام اور ویڈیوز استعمال کرنا بلیک میلنگ اور سائبر اسٹیکنگ کا عمل ہے۔ وہ عام لوگوں کو یہ تاثر دے رہا ہے کہ میں اب بھی وہ یوٹیوب چینل چلا رہا ہوں۔ درحقیقت وہ غیر مجاز انداز سے میرا یوٹیوب چینل چلا رہا ہے جس سے مجھے بہت زیادہ مالی نقصان ہوا ہے۔ اس یوٹیوب چینل پر ویڈیوز کی ویوئر شپ اربوں میں ہیں اور ان میں سے ایک ویڈیو کو زیادہ سے زیادہ 1.5؍ ارب مرتبہ دیکھا گیا ہے۔ میرے کام سے متعلق میری تمام کوششیں اور اپنے ناظرین سے جڑنے کا سب سے بڑا ذریعہ سلمان احمد نے مختلف گھناؤنے سائبر جرائم کا ارتکاب کرکے غیر قانونی طور پر چھین لیا ہے۔ نوکری سے برطرف ہونے کے بعد مجھے میرا یوٹیوب چینل واپس دینے کے بجائے وہ اب بھی اپنے مذموم عزائم کی تکمیل کیلئے میرا یوٹیوب چینل اور میرا نام استعمال کرنے پر بضد ہے۔‘‘ راحت فتح علی خان نے ایف آئی اے کو بتایا ہے کہ سلمان احمد میڈیا میں جاری ہونے والی ویڈیوز کے ذریعے مجھے بدنام کرنے اور بلیک میل کرنے میں بھی ملوث ہیں۔ اس نے مجھے دھمکی دی ہے کہ اگر میں نے کبھی اس کی بلیک میلنگ کے خلاف موقف اختیار کیا تو وہ مزید ویڈیوز جاری کرے گا۔ وہ متحدہ عرب امارات کا رہائشی ہے اور اس کا یہ عمل وہاں کے قوانین کی بھی خلاف ورزی ہے۔ لہٰذا استدعا ہے کہ سلمان احمد کے خلاف سخت انکوائری شروع کی جائے اور پریوینشن آف الیکٹرانک کرائمز ایکٹ کی دفعہ 3, 4,13, 14, 16, 20, 24 اور تعزیرات پاکستان کی دفعہ 419, 420، 468, 471 ,500 اور 506 کے تحت ایف آئی آر درج کی جائے۔ سلمان احمد نے الزامات سے انکار کیا ہے اور افسوس کا اظہار کیا ہے کہ دونوں کے درمیان 12؍ سالہ تعلق برے انداز سے ختم ہوا۔