دوسر والا سانپ بھگوان قرار، لوگوں نے دودھ پلانا شروع کردیا

دنا پور: بھارتی ریاست مغربی بنگال کے شہر سے دو سر والا سانپ برآمد ہوا جس کا لوگوں نے مذہبی عقیدت و احترام کے ساتھ خیال رکھنا شروع کردیا۔

بھارتی میڈیا رپورٹ کے مطابق مغربی بنگال کے شہر مدنا پور کے گاؤں ایکارکی کے جنگلات سے دو سر والا سانپ ملا جسے علاقہ مکینوں نے محکمہ جنگلات کو دینے سے انکار کردیا۔

محکمہ جنگلات کے افسر کاؤستو چکربورتی کا کہنا تھا کہ گاؤں کے لوگ سانپ کو بھگوان قرار دے رہے ہیں اور انہوں نے اسے دینے سے انکار کردیا جبکہ انہوں نے سانپ کی رہائش اور کھانے پینے کا بھی انتظام شروع کردیا۔

اُن کا کہنا تھا کہ سانپ کے دو سر بائیولوجیکل (طبی) مسئلہ ہے مگر جب ہم نے گاؤں کے لوگوں کو یہ بات سمجھانے کی کوشش کی تو انہوں نے ہر قسم کی بات سننے سے انکار کیا اور سانپ اٹھا کر اپنے ہجرے لے گئے۔

مزید پڑھیں: دو سر والے سانپ کی ویڈیو وائرل

کاؤستو چکربورتی کا کہنا تھا کہ بنگالی میں اسے کیوتی جبکہ ہندی میں کالا ناگ کہا جاتا ہے، سانپ کے دو سر کی وجہ موسمیاتی تبدیلیاں بھی ہوسکتی ہیں
یاد رہے کہ ہندو مذہب کے ماننے والے سانپ (کالے ناگن) کو بھگوان قرار دیتے اور اس کی پوجا بھی کرتے ہیں