پریس کانفرنس کے دوران جب ان سے 37 ٹیسٹ میں 207 وکٹ لینے والے تجربہ کار اسپنر یاسر شاہ کے بارے میں سوال پوچھا گیا، تو کہنے لگے، یاسر بھائی بہترین بولر ہیں، انہیں راولپنڈی میں کھلانے کا فیصلہ درست ہے؟ یا غلط اس بارے میں ٹیم مینجمنٹ بہتر جانتی ہے، کیونکہ کس کو کھلانا ہے، اور کسے ڈراپ کرنا، اس بارے میں مجھے نہیں معلوم ہوتا، لہٰذا میں یہی کہوں گا، یاسر بھائی کو نہ کھلانے کا فیصلہ ٹیم مینجمنٹ کا ہے اور وہ بہتر سمجھتے ہیں کہ ایسا کیوں کیا؟ یہ تو وہی بتا سکتے ہیں، مجھے اس سے زیادہ کچھ نہیں معلوم ہے۔

پنڈی کرکٹ اسٹیڈیم راولپنڈی میں جاری پہلے ٹیسٹ میں ٹاس جیتنے والے سری لنکن کپتان دیمتھ کرونا رتنے کہتے ہیں کہ انہوں نے پاکستان کے مقابلے پر بیٹنگ پہلے کرنے کا درست فیصلہ کیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ پچ بیٹنگ کے لیے اچھی ہے، ابھی کریز پر وکٹ کیپر ڈک ویلا موجود ہیں، جو ون ڈے کرکٹ میں اننگز کی شروعات کرتے ہیں، انہیں امید ہے کہ دوسرے دن ان کی ٹیم 300 کے ہندسے کو عبور کر لے گی، جو اس پچ پر ایک اچھا اسکور ہوگا
ڈیمتھ کرونا رتنے کا کہنا تھا کہ ان کی ٹیم میں دو اسپنرز موجود ہیں، اور وہ خیال کرتے ہیں کہ اس پچ پر چوتھی اننگز آسان نہیں ہوگی، کھانے کے وقفے پر 89 رنز بنا کسی نقصان کے بعد دوسرے سیشن میں چار وکٹ گنوانے کے سوال پر سری لنکا کے کپتان نے کہا کہ بیٹسمین غلطی کر گئے، جس کا انہیں احساس ہے
دیمتھ کرونا رتنے کا مزید کہنا تھا کہ ٹیسٹ میچ کا پہلا دن دونوں ٹیموں کے لیے اچھا کہا جا سکتا ہے۔

راولپنڈی ٹیسٹ کے پہلے دن سری لنکا کرکٹ ٹیم کے کپتان دیمتھ کرونارتنے نے کیرئیر کے 63 ویں ٹیسٹ میں 24ویں نصف سینچری اسکور کی، کولمبو سے تعلق رکھنے والے 31سال کے کرونا رتنے نے 110 گیندوں پر 9 چوکوں کیساتھ 59 رنز کی اننگز کھیلی، اور پہلی وکٹ پر اوشادا فرنینڈو کیساتھ 96 رنز کی شراکت بھی قائم کی تھی۔