الیکشن کمیشن اس وقت غیر فعال ہوچکا ہے کیونکہ قائم چیف الیکشن کمشنر کے پاس اہم معاملات کے حوالے سے اختیارات نہیں ہیں

حکومت اور اپوزیشن الیکشن کمیشن کے چیئرمین جسٹس (ر) سردار رضاخان کی ریٹائرمنٹ کے بعد نئے چیف الیکشن کمشنر کی تعیناتی کے معاملے پر بھی متفق نہیں ہوسکے اور عدالت نے وقت دے دیا ہے.
الیکشن کمیشن میں اس وقت سندھ اور بلوچستان سے دو،دو اراکین بھی موجود نہیں ہیں تاہم قائم مقام چیف الیکشن کمشنر جسٹس (ر) الطاف ابراہیم نے حلف اٹھا لیا ہے. الیکشن کمیشن اس وقت غیر فعال ہوچکا ہے کیونکہ قائم چیف الیکشن کمشنر کے پاس اہم معاملات کے حوالے سے اختیارات نہیں ہیں‘ کمیشن کے غیر فعال ہونے سے انتخابی فہرستوں، سیاسی جماعتوں کے فنڈز کی اسکروٹنی سمیت بہت سی اہم سرگرمیاں مکمل طور پر رک گئیں جبکہ کسی بھی ضمنی انتخاب اور بلدیاتی انتخابات کی تیاریوں میں بھی تعطل آگیا ہے.
رپورٹ کے مطابق رکن پنجاب جسٹس (ر) الطاف ابراہیم قریشی کے قائم مقام الیکشن کمشنر بننے کے بعد بھی ان کے پاس کسی قسم کی شکایت کو سننے کے لیے بینچ تشکیل دینے کا اختیار نہیں ہے کیوں کہ قانون کے تحت بینچ 3 ارکان پر مشتمل ہونا چاہیے