تصفیے کے بعد ملنے والی رقم پر بیانات،فواد چودھری کے خلاف درخواست دائر

ملک ریاض کے لندن سے تصفیے کے بعد واپس ملنے والی رقم پر وفاقی وزیر فواد چودھری کے بیانات کے معاملہ پرفواد چودھری کی نااہلی کے لئے آئینی درخواست سپریم کورٹ میں دائر کر دی گئی۔
ملک ریاض کے لندن سے تصفیے کے بعد واپس ملنے والی رقم پر وفاقی وزیر فواد چودھری کے بیانات کے معاملہ پر درخواست سماجی کارکن محمود اختر نقوی نے کراچی رجسٹری میں دائر کی ہےجس میں مؤقف اپنایا گیا ہے کہ فواد چودھری نے تصفیے کے بعد ملنے والی رقم پر غلط بیان بازی کی،غلط بیان بازی اور جھوٹ بولنے والا قومی اسمبلی کا رکن نہیں رہ سکتا۔عدالت سے استدعا ہے کہ فواد چودھری کوآرٹیکل 63ون جی کے تحت نااہل قراردیا جائےاورجب تک درخواست کا فیصلہ نہیں آتا تب تک فواد چودھری کی رکنیت معطل کرکےسرکاری عہدہ استعمال کرنے سے روکا جائے۔درخواست میں وزیر اعظم عمران خان،وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری،معاون خصوصی شہزاد اکبر ،وزیر ریلوےشیخ رشید ،سیکریٹری وزارت خارجہ اور چیئرمین نیب لندن میں پاکستانی سفیر کو فریق بنایا گیاہے۔
واضح رہے کہ نیشنل کرائم ایجنسی نے پاکستانی بزنس ٹائیکون ملک ریاض کی 9 جائیدادیں ضبط کی تھیں، جائیدادیں ضبط ہونے کے بعد معاہدے طے پایا اور این سی اے نے 190 ملین پاؤنڈز کے تحت ملک ریاض کی جائیدادوں پر عائد پابندی اٹھائی،معاہدے کے مطابق ملک ریاض نے ہائیڈ پارک بیچا اور رقم پاکستان منتقل کی،برطانیہ سے رقم سپریم کورٹ کے نیشنل بینک اکاؤنٹ میں منتقل کی گئی،یہاں یہ امر بھی قابل ذکر ہے کہ حکومت نے برطانیہ سمیت دیگر ممالک سے اہم معاہدے کیے ہیں ،جس کے نتیجے میں مزید بھاری رقوم پاکستان منتقل ہونے کے امکانات روشن ہیں۔