ہم پاکستان کی ترقی میں آئی ڈی بی کی فراخ دلی سے تعاون کرنے پر ان کے مشکور ہیں

جدہ  (امیر محمد خان سے )  وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور محمد حماد اظہر نے جدہ میں بین الاقوامی اسلامی تجارتی مالیاتی کارپوریشن (آئی ٹی ایف سی) کے ایک روزہ سیمینار میں شرکت کی۔وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور نے سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اسلامی ترقیاتی بینک کے بانی ممبروں میں سے ایک ہے اور ہم پاکستان کی ترقی میں آئی ڈی بی کی فراخ دلی سے تعاون کرنے پر ان کے مشکور ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان IDB کی  اسلامی ترقیاتی بینک کی مالی اعانت سے فائدہ اٹھانے والا تیسرا بڑا ملک ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئی ڈی بی نے اپنے قیام کے بعد سے پاکستان کے لئے 12.43 بلین  ڈالر کی فنانسنگ کی ہے۔وفاقی وزیر نے پاکستان میں صحت اور تعلیم کے شعبوں خصوصا پولیو کے خاتمے کے منصوبے میں اسلامی ترقیاتی بینک کی امداد کو سراہا۔حماد اظہر نے مسلم ممالک میں تجارت کو فروغ دینے کے ذریعے لوگوں کی زندگی میں تبدیلی لانے کے لئے آئی ٹی ایف سی کی کوششوں کو  بھی سراہا۔سیمینار کے دوران انہوں نے ”اسٹریٹجک ترقی کی حیثیت سے تجارت: آئی ٹی ایف سی اور اس کے شراکت داروں کے کردار” کے موضوع پر پینل بحث میں بھی حصہ لیا اور اپنے خیالات کا اظہار کیا۔ انہوں نے بتایا کہ بین الاقوامی تجارت پائیدار ترقیاتی اہداف کے حصول میں معاون ہے اور لوگوں کی زندگیوں پر مثبت اثر ڈالتی ہے۔ پائیدار ترقی کے مقاصد کو حاصل کرنے اور مثبت تبدیلی لانے اور عام آدمی کی زندگیوں کو بہتر بنانے کے لئے مسلم ممالک کے مابین تجارت بڑھانے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے آئی ٹی ایف سی کو تجویز دی کہ  اسلامی بینکاری میں تربیتی کورسز تیار کریں کیونکہ پاکستان میں اسلامی بینکاری پنپ رہی ہے۔ سوالوں کے جواب میں وفاقی وزیر نے کہا کہ پاکستان کی 40 فیصد معیشت  چھوٹے صنعتی یونٹس  پر مبنی ہے اور ہم برآمدات پر مبنی معیشت  کی جانب جا رہے ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ قریبی خطے اور مسلم ممالک کے درمیان تجارت پر توجہ دینے اور مواقع کی تلاش کرنے کی ضرورت ہے۔ انہوں نے بتایا کہ سی پیک کا پاکستان کی ترقی میں اہم کردار ہے اور یہ  تمام ممالک کو سرمایہ کاری کے مواقع فراہم کرتا ہے.وزیر نے دوسرے مسلم ممالک کے ماہر معاشیات اور مالیاتی مشیروں اور بینکوں کے سی ای او سے بھی بات چیت کی اور دوطرفہ تجارت اور سرمایہ کاری کی ترقی سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا۔بعد ازاں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ آئی ٹی ایف سی سے درخواست کی گئی ہے کہ وہ پاکستان میں ایگزم بینک قائم کرے جو ہماری برآمدات میں مددگار ثابت ہوسکے۔ انہوں نے مزید بتایا کہ اس تجویز پر غور کیا جارہا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ آئی ٹی ایف سی ہماری ایندھن کی ضروریات کو فنانس کرنے  میں مالی اعانت فراہم کرتی ہے اور اس سے ہمارے زرمبادلہ پر دباؤ کم ہوتا ہے۔دریں اثناء  جدہ میں پاکستان کے وزیر برائے اقتصادی امور، محمد حماد اظہر نے آج جدہ میں اسلامی ترقیاتی بینک  کے صدر،ڈاکٹر بندر الحجر کے ساتھ ایک اہم ملاقات کی. وفاقی وزیر جدہ میں بین الااقوامی اسلامی تجارتی مالیاتی کارپوریشن کے سیمینار میں شرکت کے لئے یہاں موجود ہیں    وزیر نے  پاکستان میں اہم معاشی منصوبوں کی مالی اعانت میں آئی ڈی بی کے اہم کردارکا ذکر کیا۔ وزیر نے اسلامی ترقیاتی بینک  کے سربراہ پر زور دیا کہ وہ پاکستان میں بینک کا پورٹ فولیو بنائے جو اسلامی دنیا کی بڑی معیشت میں سے ایک ہے۔ انہوں نے کنٹری سپورٹ پروگرام میں پاکستان کو شامل کرنے کی تجویز دی.۔حماد اظہر نے بجٹ میں مالیاتی بجٹ  سپورٹ پروگرام کی بحالی کی تجویز پیش کی جس سے پاکستان میں ملک کے زر مبادلہ کے ذخائر کو تقویت ملے گی۔  حماد اظہر نے ملک میں جاری اہم معاشی منصوبوں اور پاکستان کے جغرافیائی محل وقوع کا حوالہ دیتے ہوئے، آئی ڈی بی کے سربراہ کو اسلام آباد میں بینک کا علاقائی مرکز اور گیٹ وے دفتر قائم کرنے کی دعوت دی۔ انہوں نے بتایا کہ ورلڈ بینک اور اے ڈی بی کے اسلام آباد میں اپنے علاقائی دفاتر ہیں۔اسلامی ترقیاتی بینک  کے صدر ڈاکٹر بندر الحجر نے حماد اظہر کا خیرمقدم کیا اور کہا کہ آئی ڈی بی پاکستان کو بہت اہمیت دیتا ہے۔

اپنا تبصرہ بھیجیں