کاروبارکو مزید آسان بنانے کے لئے حکومت سندھ کے اقدامات

کاروباریاصلاحات میں مزید بہتری لانے کے لئے سندھ حکومت کا شاپ رجسٹریشن فیس ختم کرنے کا فیصلہ۔
 
چیفسیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ کی زیر صدارت ایز آف ڈوئنگ بزنس کے متعلق  اہم اجلاس
 چیف سیکریٹری سندھ سید ممتازعلی شاہ کی زیر صدارت ایز آف ڈوئنگ بزنس کے متعلق اہم اجلاس سندھ سیکریٹریٹ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں صوبے میں کاروبار شروع کرنےسے متعلق اصلاحات کا جائزہ لیا گیا۔چیئرپرسن پلاننگ ناہید شاہ درانی، چیئرمین ایس آربی خالد محمود، سیکریٹری انویسٹمنٹ نجم شاہ، سیکریٹری بلدیات روشن علی شاخ، سیکریٹریخزانہ حسن نقوی، سیکریٹری کوآپریٹو اختر عنایت مغیری، ڈی جی ایس بی سی اے ظفر احسن،سمیت ایف بی آر  اور دیگر متعلقہ وفاقی اورصوبائی محکموں کے افسران شریک۔اجلاس میں ورلڈ بینک کے نمائندے، صدر کراچی چیمبر آفکامرس اور صدر فیڈرل چیمبر آف کامرس بھی شریک ہوئی۔ اجلاس کاروباری اصلاحات لانے کے حوالے سے فیصلہ کیاگیا کے 31  جنوری تک محکمہ ایکسائز سے پروفیشنلاور پراپرٹی ٹیکس کو آن لائین کر دیا جائے گا جب کے ایس بی سی اے 6 ماہ کے اندر تمام4 کٹیگریز کو ون ونڈو آپریشن میں شامل کرلے گا۔ اجلاس میں ایس بی سی اے اور سیکریٹری کوآپریٹو نے بتایاکے ہاؤسنگ سوسائٹیز کا رکارڈ کمپیوٹرائزڈ نہیں ہے جس سے کئے مسائل ہو رہے ہیں۔ اجلاسمیں سیکریٹری لیبر نے بتایا کے محکمہ لیبر نے شاپ رجسٹریشن فیس ختم کرنے کے لئے ایکسمری بھیج دی ہے جس کے بعد کاروباری اصلاحات میں مزید بہتری آئی گی۔
اجلاسمیں فیصلہ کیا گیا کے صوبے کی 3000 سے زائد کوآپریٹو سوسائٹیوں کی رکارڈ کو کمپیوٹرائزڈکیا جائے گا جس کے لئے سیکریٹری انویسٹمنٹ کی سربراہی میں 4 رکنی کمیٹی قائم کردی گئی۔ چیف سیکریٹریسندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ کراچی میں ترقیاتی کاموں کے لئے آئندہ 3 سالوں میں300 ارب روپے خرچ کئے جائیں گے۔ کراچی میں جیسے امن امان کا مسلئہ حل ہوا ہے اب شہرکو جدید قسم کا انفراسٹرکچر دیا جائے گا۔ ممتاز علی شاہ نے مزید کہا کے تمام اسٹیکہولڈرز سے مل کر کراچی شہر کے صنعتی علاقوں میں انفراسٹرکچر کو جلد بہتر کیا جائے گا۔ممتاز علی شاہ نے مزید کہا کے سندھ حکومت کے اصلاحات سے پاکستان کی رینکنگ بہتر ہوئیہے۔صوبے کے مختلف محکموں میں اصلاحات کئے جا رہے ہین  عالمی درجہِ بندی میں پاکستان کی رینکنگ مزید بہترہوگی۔

اپنا تبصرہ بھیجیں