40 ہزار روپے کے پریمئم بانڈز کی سرمایہ کاری میں اضافہ

اسٹیٹ بینک کی جانب سے جاری اعدادوشمار میں کہا گیا اکتوبرمیں چالیس ہزارروپےکےپریمئم بانڈزمیں سرمایہ کاری میں اضافہ میں ایک سوبانوے فیصدکااضافہ ریکارڈکیاگیا اور پریمئم بانڈزمیں سرمایہ کاری کا حجم سترہ ارب روپے رہا جوگزشتہ سال اکتوبرمیں پانچ ارب اسی کروڑروپےتھا۔

موجودہ حکومت نے معیشت کو دستاویزی کرنے کیلئے چالیس ہزار والے غیر رجسٹرڈ بانڈز بند کردئیے تھے، جس کے بعد رجسٹرڈ بانڈز سرمایہ کاری بڑھی ہے، پریمئم بانڈز پرایک اعشاریہ نوچھ فیصد کامنافع بھی ملتاہے۔

دوسری جانب اکتوبرمیں تمام بانڈزکی مجموعی سرمایہ کاری میں بیس فیصد کی کمی ہوئی ہےیاد رہےاسٹیٹ بینک نے 40 ہزار روپے مالیت کے پرانے رجسٹرڈ پرائز بانڈ کی خرید و فروخت بند کردی تھی اور انہیں تبدیل کرانے کی آخری تاریخ 31 مارچ 2020 ہے۔

ذرائع کا کہنا تھا پرانے پرائز بانڈز کی اب کوئی قرعہ ندازی بھی نہیں ہوگی، پرانے پرائز بانڈ کو کیش بھی نہیں کیا جائے گا تاہم بانڈ قومی بچت کے سرٹیفکیٹ میں تبدیل کرائے جاسکتے ہیں۔

پرانے پرائز بانڈ پریمیم پرائز بانڈ میں بھی رجسٹرکرا ئے جاسکتےہیں۔ اس سلسلے میں فارم بھرکررقم بانڈکےمالک کےاکاؤنٹ میں منتقل کی جاسکے گی۔