کراچی : کپڑے کے دو تاجروں کو مبینہ طور پر چار پولیس اہکاروں نے اغوا کے بعد تاوان وصول کیا

کراچی میں شارٹ ٹرم کڈنیپنگ کا ایک اور واقعہ سامنے آگیا

کراچی : کپڑے کے دو تاجروں کو مبینہ طور پر چار پولیس اہکاروں نے اغوا کے بعد تاوان وصول کیا

کراچی : تاجر نے شارٹ ٹرم کڈنیپنگ کی سھراب گوٹھ تھانے میں درخواست جمع کروادی

کراچی : تیس نومبر کو بہادر اور صمند نامئ رشتے دار کےساتھ نیو سبزی منڈی کی طرف جارہا تھا کہ دو موٹر سائیکلوں پر چار سادہ لباس اہلکاروں نے روکا ،درخواست گزار بہادر

کراچی : اپنا تعارف پولیس سے کروایا اور اسلحے کے زور پر ہماری آنکھوں پر پٹیاں بند کر جنگل میں لے گے ،بہادر

کراچی : ہمیں کہاں تم منشیات فروش ہو تھماری گاڑی سے اسلحہ ملا ہے پانچ لاکھ دو ورنہ تمھارا انکاونٹر کردیں گے ،بہادر

کراچی : ہم نے کہاں ہم کپڑےکا کام کرتے ہیں لیکن انھوں نے ہم پر تشدد کیا اور پسسوں کا مطالبہ کیا ،بہادر

کراچی : پھر ہمیں تھانہ سھراب گوٹھ لے آے جہاں آفتاب نامئ اہکار نے تھانے کے اوپر کمرے میں رکھا اور انکاونٹر کی دھمکئ دیتے رہے

کراچی : میر حسن نامی بندہ میرے گھر گیا جہاں سے میرے والد اور بہنوئ سے چار لاکھ روپے لئے ،درخواست گزار

کراچی : میرے رشتے دار سے بھی بائئس ہزار لیے اور ہم کو تھانے کے پچھلے راستے چھوڑا

کراچی :ایس ایچ او نے پہلے ایسے واقعہ کا انکار کیا جب درخواست کا زکر کیاتو حیلے بہانے شروع کردیے

کراچی: درخواست جھوٹی پر مبنی ہے یہ لوگ منشیات فروش ہیں ،ایس ایچ او سھراب گوٹھ

کراچی : انکے خلاف کارروائ کرتے ہیں اس لئے پریشر ڈالنے کے لئے یہ لوگ درخواستیں لگاتے ہیں ،پولیس