ہ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین بھی اسی سلوک کے مستحق ہیں جو نواز شریف کیساتھ کیا گیا۔

سابق صدر پاکستان آصف علی زرداری کی درخواست ضمانت اسلام آباد ہائیکورٹ میں دائرکردی گئی۔ ضمانت طبی بنیادوں پر دائر کی گئی۔ رپورٹ کے مطابق درخواست آصف علی زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک کی جانب سے دائر درخواست میں نیب اوراحتساب عدالت کوفریق بنایا گیا۔درخواست میں آصف علی زرداری کی جانب سے موقف اختیار کیاگیا ہے کہ مجھے دل کی بیماری میں مبتلا ہوں،جبکہ تین اسٹنٹ بھی ڈالے جاچکے ہیں، شوگر کا مرض بھی لاحق ہے۔
شوگر کے علاج کیلئے علاج کی ضرورت ہے۔آصف علی زرداری کے وکیل کی جانب سے میڈیکل رپورٹس بھی درخواست کے ساتھ منسلک کی گئی۔ آصف علی زرداری نے عدالت سے استدعاکی ہے کہ بہت بیمار ہوں بہت ساری بیماریاں لاحوق ہیں،علاج کیلئے ضمانت دی جائے۔
یادرہے اس سے قبل وزیر داخلہ بھی سابق صدر آصف علی زرداری کو رہا کرنے کی حمایت کر چکے ہیں، بریگیڈئیر ریٹائرڈ اعجاز شاہ کا کہنا تھا کہ پیپلز پارٹی کے شریک چیئرمین بھی اسی سلوک کے مستحق ہیں جو نواز شریف کیساتھ کیا گیا۔
اعجاز شاہ نے کہا تھا کہ نواز شریف بیماروں کی طرح باہر جاتے تو اتنا شور نہ ہوتا۔ ان کے ہشاش بشاش باہر جانے سے تاثر ملتا ہے کہ کچھ گڑبڑ ہوئی ہے ۔ مریم نواز کو بیرون ملک جانے کی اجازت دی گئی تو مخالفت کروں گا۔ آصف علی زرداری کے ساتھ بھی نواز شریف جیسا سلوک ہونا چاہیے۔ اگرپاکستان میں ان کا علاج نہیں ہے تو باہر جانے دیا جائے۔ تاہم اب رپورٹس کے مطابق آصف علی زرداری نے اسلام آباد اوٴہائیکورٹ میں طبی بنیادوں پر درخواست ضمانت دائر کردی ہے۔                         

اپنا تبصرہ بھیجیں