نوجوانوں کے لئے خوشخبری، حکومت ایک اور مطالبہ پورا کرنے کو تیار

وفاقی حکومت نوجوانوں کاایک اوردیرینہ مطالبہ پوراکرنے کو تیارہے ، کامیاب جوان پروگرام کےتحت دوسرامرحلہ آئندہ ماہ شروع کرنے کا اعلان کردیا گیا اور کہا نوجوانوں کواسلامی بینکنگ کےتحت بلاسود قرضوں کی فراہمی کی جائے گی جبکہ پہلے مرحلے کے درخواست گزاروں کو قرض کی تقسیم رواں ماہ شروع ہونے کا امکان ہے۔

وزیراعظم کےمعاون خصوصی عثمان ڈارکی وزیراعلیٰ کے پی کے محمود خان سے ملاقات ہوئی، جس میں صوبائی وزیرخزانہ تیمورجھگڑا اور سینئر وزیر عاطف خان اور مشیروں نے شرکت کی۔

عثمان ڈار نے اسلامی بینکنگ کے ذریعے بلاسود قرضوں کی فراہمی پر بریفنگ دیتے ہوئے کہا صوبے بھر سے 5 ہفتے میں90ہزار درخواستیں موصول ہوئیں، زیادہ درخواستیں پشاور سے موصول ہوئیں، جن میں 11ہزارخواتین بھی شامل ہیں جبکہ ضم شدہ اضلاع سے بھی نوجوانوں کی بڑی تعدادنےدرخواستیں دیں۔

وزیراعلیٰ کےپی کا کہنا تھا کہ نوجوانوں کی فلاح وترقی موجودہ حکومت کی ترجیح ہے، نوجوانوں کومختلف شعبوں میں آگےبڑھنےکےمواقع ملیں گے، موصول شدہ درخواستوں کوفوری پراسس کرنے کی ہدایت کی۔

وزیراعلیٰ کے پی نے ضم شدہ علاقے کے نوجوانوں کے لئے ٹائم لائن بڑھانے کی درخواست کی اور انٹرنیٹ اوربینکنگ کاموثرنظام نہ ہونےپرمتبادل سہولت کےآپشن پر بھی غور کیا گیا۔

عثمان ڈار نے کہا منصوبے کی کامیابی سے ملکی مجموعی صورتحال میں بہتری آئے گی، وزیراعظم نےصوبائی حکومتوں کو اعتماد میں لینے کی ہدایت کی ہے ، شفافیت یقینی بنانے کے لئے پروگرام مکمل طور پرڈیجیٹلائز کردیا گیا ہے۔

معاون خصوصی کا کہنا تھا کہ نوجوانوں کے لئے بلاسود قرضوں کی فراہمی کا سلسلہ شروع کر رہے ہیں، پہلےمرحلے میں رہ جانے والے نوجوان دوسرے مرحلے میں کوائف جمع کراسکتے ہیں۔