ترقی پسند طلباء کیخلاف درج مقدمہ فوری واپس لیا جائے۔ چیئرمین پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری کا مذمتی بیان

 پاکستان پیپلزپارٹی کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری نے طلباء کیخلاف مقدمے کو ریاستی جبر قرار دے دیا۔ انہوں نے طلباء کے خلاف مقدمے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ ریاست مشال خان کے والد کو انصاف نہ دے سکی اوراب ان کیخلاف بھی مقدمہ درج کرلیا، مقدمہ فوری واپس لیا جائے۔ انہوں نے اپنے ردعمل میں کہا کہ ترقی پسند طلباء کے مارچ سے رجعت پسند قوتیں بوکھلا گئی ہیں۔
پرامن مارچ کے طلبہ کے خلاف مقدمے کا اندراج ریاستی جبر ہے۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ ریاست مشال خان کے والد کو انصاف نہ دے سکی اوراب ان کیخلاف بھی مقدمہ درج کرلیا۔ بلاول بھٹو نے کہا کہ طلباء مارچ کے منتظمین کیخلاف ایف آئی آرکے اندراج کی مذمت کرتے ہیں
ترقی پسند طلباء پاکستان کا مستقبل ہیں۔ ہم ان کے تحفظ پر سمجھوتہ نہیں کرینگے۔ پنجاب حکومت فوری طورپرطلباء مارچ کے منتظمین کے خلاف درج ایف آئی آر کو واپس لے۔
واضح رہے تھانہ سول لائینز پولیس نے صوبائی دارلحکومت لاہورمیں مال روڈ پر طلباء یکجہتی مارچ کے منتظمین کے خلاف مقدمہ درج کرلیا۔ ایف آئی آر میں حکومت مخالف اور ریاستی اداروں کیخلاف تقاریر کی دفعات شامل ہیں۔ بتایا گیا ہے کہ مقدمے میں مشعال خان کے والد اقبال لالہ، کامل خان، عمارعلی جان،فاروق طارق سمیت دیگر لوگوں کو نامزد کیا گیا ہے جبکہ 300 تک نامعلوم افراد کو بھی شامل کیا گیا ہے۔
مزید برآں طلباء یونین بحالی کے حوالے سے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ یونیورسٹیاں مستقبل کے لیڈرز کو پروان چڑھاتی ہیں۔ بدقسمتی سے پاکستانی یونیورسٹیوں میں طلباء تنظیمیں پُرتشدد بن چکی ہیں۔ ضابطہ اخلاق کیلئے عالمی یونیورسٹیوں کے تجربے سےاستفادہ کریں گے۔ طلباء یونینز کی بحالی کیلئے جامع ضابطہ اخلاق مرتب کریں گے

اپنا تبصرہ بھیجیں