کپتانی سے ہٹائےجانے کیلئے ذہنی طور پر تیار تھا، سرفراز

سرفرازاحمد نے انکشاف کیا ہے کہ وہ کپتانی سے ہٹائےجانے کے لیے ذہنی طور پر تیار تھے، جو حالات تھے اس سے اندازہ ہورہا تھا کہ کپتانی جانے والی ہے۔

ایک انٹرویو میں سابق کپتان کا کہنا تھا کہ تمام سینئرز نے مشورہ دیا کہ ڈومیسٹک کرکٹ کھیلوں اور میں ایسا ہی کررہا ہوں، بعض اوقات اس طرح کا بریک ضروری ہوتا ہے کیونکہ میں گزشتہ تین سال سے مسلسل ہائی پریشر کرکٹ کھیل رہا ہوں۔

یہ بھی پڑھیے: سرفراز نے 5 سال بعد فرسٹ کلاس میں سنچری بنا ڈالی

ایک سوال کے جواب میں سرفراز نے کہا کہ فی الحال ساری توجہ ڈومیسٹک کرکٹ پر مرکوز ہے، مجھے قومی ٹیم کے بارے میں بالکل فکر نہیں۔

سینٹرل کنٹریکٹ کے حوالے سے سرفراز کا کہنا تھا کہ ابھی وہ سینٹرل کنٹریکٹ میں شامل ہیں اور ڈومیسٹک کھیلنے پر آدھی فیس ملتی ہے۔

پاکستان کرکٹ بورڈ نے سری لنکا کے خلاف ٹی ٹوئنٹی سیریز میں کلین سوئپ شکست کے بعد سرفرازاحمد کو تینوں فارمیٹ کی کپتانی سےفارغ کردیا تھا۔