بارہویں عالمی اردو کانفرنس 5 دسمبر جمعرات سے آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی میں شروع ہوگی

کراچی : آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی کے زیراہتمام سالانہ عالمی اردو کانفرنس دسمبر کی 5 تاریخ سے کراچی میں شروع ہوگی بارہویں عالمی اردو کانفرنس میں پاکستان اور بھارت سمیت دنیا کے مختلف براعظموں اور ملکوں سے مندوبین کی بڑی تعداد شریک ہوگی بارہویں عالمی اردو کانفرنس میں مجموعی طور پر چالیس مختلف سیشن منعقد کیے جائیں گے۔آٹھ کونسل آف پاکستان کراچی کے صدر احمد شاہ نے ایف ایم ریڈیو 107 کے پروگرام میں میزبان حماد اسماعیل کے سوالوں کا جواب دیتے ہوئے بتایا کہ عالمی اردو کانفرنس کا انعقاد سب سے پہلے انہوں نے آرٹس کونسل کا سربراہ بننے کے بعد 2008 میں شروع کیا تھا انتہائی نامساعد حالات اور محدود وسائل کے باوجود انہوں نے پہلے سال ہی اردو عالمی کانفرنس منعقد کرنے کا اعلان کر کے سب کو حیران کیا اور پھر اسے حقیقت کا روپ دیا۔


اس کے بعد ہر آنے والے سال میں اردو کی عالمی کانفرنس کا کامیابی سے انعقاد عمل میں لایا گیا اب یہ ایک عالمی فیچر بن چکا ہے دنیا میں جہاں جہاں اردو بولنے والے موجود ہیں وہ اس عالمی اردو کانفرنس کا پہچانیں اور بے تابی سے انتظار کرتے ہیں پہلی عالمی اردو کانفرنس میں بھارت سمیت مختلف ملکوں سے نامور ادبی شخصیات اور شاعروں نے شرکت کی تھی آج ان میں سے اسی فیصد سے زائد بزرگ دنیا سے رخصت ہو چکے ہیں انتقال کر گئے ہیں اب انکی کمی ہمیشہ شدت سے محسوس ہوتی ہے لیکن اب نوجوانوں نے آگے کا بیڑا اٹھانا ہے اس لیے ہم نے نوجوانوں کو آگے بڑھانے کا عزم کیا ہے بارہویں عالمی اردو کانفرنس میں بھی بھارت سمیت دنیا کے مختلف ملکوں سے مہمان آ رہے ہیں انہوں نے بتایا کہ کراچی نے بہت تشدد واقعات کی وجہ سے ادبی لحاظ سے کافی نقصان اٹھایا لیکن اس کے بعد ایک کھنڈر اور ویران شہر سے یہ شہر دوبارہ اپنی رونقوں کی جانب لوٹ رہا ہے اور اس میں آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی کا بنیادی اور مرکزی کردار ہے ۔یہاں پر ڈرامہ تھیٹر میوزک ڈانس سٹوری ٹیلر شاعری کی محافل اور ورکشاپس ٹریننگ سیشن شروع کیے گئے ہیں اکیڈمیاں بنائی گئی ہیں بارہویں عالمی اردو کانفرنس گزشتہ گیارہ عالمی اردوکانفرنس دو کے مقابلے میں کافی مختلف اور منفرد ہوگی اس میں سندھی سمیت دیگر زبانوں کو بھی فروغ دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

 

جس طرح سرائیکی سندھی اور دیگر زبانیں بولنے والوں نے اپنی باہیں کشادہ کرکے اردو کو سینے سے لگایا اسی طرح اب اردو کانفرنس میں دیگر زبانوں کو بھی آگے بڑھایا جائے گا ان کے فروغ کے لیے کام ہوگا بزرگوں اور جوانوں کے ساتھ ساتھ بچوں کے ادب پر بھی کام کر رہے ہیں بارہویں عالمی اردو کانفرنس میں کی مشہور شخصیات شامل ہوگئیں اداکارہ شبنم کا ایک خصوصی سیشن رکھا گیا ہے حامد میر انور مقصود سہیل وڑائچ ضیا محی الدین جیسی شخصیات کے سیشن ہوتے ہیں صحافی بھی اسے اپنا پروگرام سمجھتے ہیں اس میں شرکت کرتے ہیں سوشل میڈیا پر بہت چرچا ہے امریکہ کینیڈا برطانیہ جاپان جرمنی چین سویڈن سمیت مختلف ملکوں سے لوگ آرہے ہیں شروع شروع میں ہمیں مہمانوں کو ٹھہرانے اور ان کے استقبال اور ان کا خیال رکھنے کے حوالے سے محدود وسائل کی وجہ سے مشکلات ہوتی تھی اس کے باوجود ہم نے کبھی کراچی یونیورسٹی کبھی دیگر اداروں کے ہوسٹل لے کر گزارہ کیا اور اس کے بعد وسائل بڑھتے گئے ہم آرٹسٹوں کی مدد بھی کرتے ہیں آرٹس کونسل کے پلیٹ فارم پر محدود وسائل کے باوجود علاج معالجے کی سہولت دی جاتی ہے بچیوں کی شادیوں میں اپنا کردار ادا کرتے ہیں دیگر ذرائع سے مدد کرتے ہیں ہم اردو زبان کے فروغ کے لیے کوشاں ہیں 816 پاکستان کراچی اب رونقوں کا مرکز ہے کراچی شہر کی رونقیں اپنی مثال آپ ہیں اور ہمیں خوشی ہے کہ کوئی بھی اس سلسلے میں کام کرے آرٹس کونسل کا نام ہوتا ہے انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ کسی بھی زبان کا کوئی مذہب نہیں ہوتا۔

بھارت میں اردو کو مسلمانوں کی زبان قرار دے کر دراصل اردو کو نقصان پہنچایا گیا ورنہ بھارت میں بہت بڑی آبادی میں اردو کو فروغ دینے کا کام ہوتا ۔انہوں نے بتایا کہ آرٹس کونسل میں اردو کی عالمی کانفرنس کے ساتھ ساتھ ہم میوزک رقص تھیٹر ڈرامہ سمیت 12 مختلف شعبوں کے فروغ کے لیے کام کرتے آرہے ہیں شہر میں میرے دوستوں نے میری شروع سے ہی مدد کی اور ہماری کامیابیوں میں ہماری ٹیم اور دوستوں کا پورا حصہ ہے آج خوشی محسوس ہوتی ہے کہ دنیا بھر میں جہاں بھی اردو کی بات ہوتی ہے اور اردو کی یاد میں کانفرنس کا ذکر ہوتا ہے وہاں آج کونسل آف پاکستان کراچی کا نام ہیں سب سے آگے ہوتا ہے ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ ایک وقت تھا شروع شروع میں ہمیں اخبار والوں کا اور میڈیا والوں کی محنتیں کرنی پڑتی تھی ان کے دفاتر کے چکر لگانے پڑتے تھے آج سوشل میڈیا کی وجہ سے ہمارا رسپانس اور رسائی بہت زیادہ اور بہت بڑھ گئی ہے عوام کسی کو لکھ نہیں کراتے اور یہ بات میں مذاق میں نہیں کہہ رہا بلکہ حقیقت یہی ہے کہ ہمیں اندازہ ہوا ہے کہ سوشل میڈیا کی ریچ اور رسائی بہت زیادہ ہے ہمارے نوجوان بہت اچھا کام کر رہے ہیں ۔

 

انہوں نے کہا کہ اردو کی حال میں کانفرنس میں ہم نے فوڈ فیسٹیول کا انعقاد بھی کیا ہے چائے کمپنی نے اسپانسرشپ کی ہے اس لیے جائے تو ہم انکی پلائیں گے لیکن اگر کوئی پٹھان کی چائے پینا چاہتا ہے تو اس کا بھی معقول انتظام ہوگا ہم نے مختلف ٹاپ برانڈز کو اسٹال دیئے ہیں تاکہ یہاں پر فیملی ہائے اور محدود ہو اردو کی بارہویں کانفرنس کا انعقاد جمعرات کو شام چار بجے سے شروع ہوگا اس کے علاوہ روزانہ صبح دس بجے سے کانفرنس کے سے شروع ہوجائیں گے ہمیں امید ہے کہ بہت بڑی تعداد میں اس سال لوگ اردو کی 12 ویں عالمی کانفرنس میں شرکت کرنے آئیں گے ۔کے سوال سے معقول اور مناسب انتظامات کیے جا رہے ہیں