وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں پبلک سیفٹی کمیشن کا اجلاس

کراچی / وزیراعلیٰ سندھ / اجلاس / 27 نومبر 2019ء

* وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ کی صدارت میں پبلک سیفٹی کمیشن کا اجلاس

* اجلاس میں پی ایس پی کے تمام ممبرز، مشیر قانون مرتضیٰ وہاب، ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن، سیکریٹری داخلہ عثمان چاچڑ، سیکریٹری خزانہ حسن نقوی، ممبر حاجی نظام، جھمات مل، اراکین صوبائی اسمبلی شرجیل میمن، امداد پتافی، ڈی اے کے حسنین مرزا، شمیم ممتاز، پی ٹی آئی کے محمد علی عزیز، شہناز بیگم اور دیگر شریک

* اجلاس کے ایجنڈہ پر نبیل قتل کیس

* اجلاس میں گزری پولیس کی 22 نومبر کو فائرنگ میں نبیل ہودبائی کے قتل کیس پر تبادلہ خیال

* ایڈیشنل آئی جی پولیس نے بتایا کہ اس کیس میں اعجاز احمد ایس ایس پی انویسٹی گیشن تحقیقات کر رہے ہیں

* ایف آئی آر نمبر 2019/149 درج کر کے گزری پولیس کے سب انسپیکٹر غفار اور ہیڈ کانسٹیبل آفتاب محمد علی گرفتار کیئے ہیں

* پولیس نے 4 گولیاں فائر کیں جس میں سے ایک سیدھی فائر میں رضا زخمی ہوا اور نبیل جان بحق ہوگئے

* وزیراعلیٰ سندھ نے کراچی میں جتنے بھی پولیس نفری پولیس اسٹیشنز پر کام کر رہی ہے ان کی ٹریننگ کی ہدایت دیدی

* یہ ٹریننگ روڈ چیکنگ، عوام سے ڈیل کرنا، کرمنلز کو روڈ پر کیسے ڈیل کیا جائے پر مشتعمل ہونی چاہئے، وزیراعلیٰ سندھ

* ریفریشرکورسز ہونے چاہئے، وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ

* یہ چیکنگ وغیرہ کی ایس او پی بناکر اردواور سندھی میں پرنٹ کروا کر پولیس اسٹیشنز پر دی جائے۔ وزیراعلیٰ سندھ

* یہ بہت تقلیف دہ واقعہ تھا، میں خود بھی نبیل کی جنازہ نماز میں گیا تھا، بہت تکلیف دی منظر تھا، وزیراعلیٰ سندھ

* پولیس شہریوں کی حفاظت کیلئے ہے اور وہ کام اس کو کرنا چاہئے، وزیراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ

عبدالرشید چنا
میڈیا کنسلٹنٹ وزیراعلیٰ سندھ