امریکی منڈیوں میں پاکستانی مصنوعات جگہ بناسکتی ہیں، نیتھن سیفرٹس

امریکی منڈیوں میں پاکستانی مصنوعات جگہ بناسکتی ہیں، نیتھن سیفرٹسپاکستانی آم کوالٹی کے لحاظ سے دنیا کا بہترین آم ہے، ایکسپورٹرز کیلئے دوطرفہ تجارتی مواقعوں کی تلاش کی ضرورت ہے،امریکی افسر   دو طرفہ تجارتی تعلقات کے فروغ کے لئے بہترین مواقع موجود ہیں، سینئر کمرشل افسر  کا “فیڈریشن ہاوس” میں بزنس کمیونٹی سے خطاب  ہوسٹن میں مارچ 2020ء میں منعقد ہونے والی بزنس ایکسپو میں امریکی حکومت کے تعاون سے دوطرفہ تجارت میں اضافہ ہوگا، امتیاز حسین کراچی(۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔) فیڈریشن آف پاکستان چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری (FPCCI) کی پاک امریکہ بزنس کونسل کا اجلاس فیڈریشن ہاوس میں چیئرمین امتیاز حسین کی زیر صدارت منعقد ہوا جس میں امریکی قونصلیٹ کے سینئر کمرشل افسر مسٹر نیتھن سیفرٹس نے خصوصی شرکت کی۔ اس موقع پرامریکی قونصلیٹ کراچی کے اکنامک اسپیشلسٹ مسٹر تاشفین مہدی، FPCCI کے نائب صدر مسلم محمدی،AM PAK BDFکے سید ناصر وجاہت،محترمہ شاہین شیریں، ڈاکٹر زاہد حسن،نعمان حمدانی، سعید راجپوت، سید سفیر الحسن شاہ، غیاث حمدانی اور دیگر بھی موجود تھے۔  کونسل چیئرمین امتیاز حسین نے ممبران سے معزز مہمان کا تعارف کرایا اور بتایا کہ مسٹر نیتھن سیفرٹس امریکی قونصلیٹ کراچی میں حال ہی میں تعینات ہوئے ہیں۔ پاکستان کی بزنس کمیونٹی کیلئے خوش آئند بات یہ ہے کہ مسٹر نیتھن سیفرٹس بزنس کو فروغ دینے کے حوالے سے شہرت رکھتے ہیں۔  اس موقع پر امریکی قونصلیٹ کراچی کے سینئر کمرشل افسر مسٹر نیتھن سیفرٹس نے FPCCI کی پاک امریکہ بزنس کونسل کے ممبران سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میرے لئے یہ خوشی کا باعث ہے کہ میں آج پاکستان کے صنعت کاروں، مختلف شبعہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والی شخصیات اور ایکسپورٹرز سے مخاطب ہوں آپ جانتے ہیں کہ امریکی حکومت پاکستان کے ساتھ دوستانہ تعلقات کے ساتھ ساتھ کاروباری تعلقات کے فروغ کیلئے بھی سرگرم عمل ہے۔ انہوں نے بتایا کہ امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ کاروباری تعلقات کے فروغ کے زبردست حامی ہیں ہم چاہتے ہیں کہ پاکستان کے ساتھ دوطرفہ کاروباری تعلقات کے نئے دور کا آغاز ہو میں FPCCI کے ممبران کو دعوت دیتا ہوں کہ وہ دوطرفہ کاروباری تعلقات کو فروغ دینے کیلئے مزید اقدامات کریں۔اس موقع پر میں پاکستانی آم کی خصوصی طور پر تعریف کرنا چاہتا ہوں میں نے اگست کے مہینے میں پاکستانی آم کھایا تھا میں اِس نتیجے پر پہنچا ہوں کہ پاکستانی آم دنیا کا بہترین آم ہے اور ایکسپورٹ کے حوالے سے امریکی منڈیوں میں پاکستانی آم کی مزید گنجائش موجود ہے، امریکی منڈیوں میں پاکستانی مصنوعات آسانی سے جگہ بناسکتی ہیں اِسی طرح پاکستانی منڈیوں میں امریکی مصنوعات کی گنجائش موجود ہے۔  اس موقع پر ایف پی سی سی آئی کے نائب صدر مسلم محمدی نے خطاب کرتے ہوئے معزز مہمانوں کو فشریز کے شعبہ میں ترقی اور معیار کے حوالے سے بتایا اور امریکی مہمانوں کو دعوت دی کہ اگر وہ پاکستانی سی فوڈ کی ایکسپورٹ میں دلچسپی رکھتے ہیں تو اْنہیں سی فوڈ سہولیات کے مراکز کے دورے کرائے جاسکتے ہیں۔  پاک امریکہ بزنس کونسل کے چیئرمین امتیاز حسین نے امریکی قونصلیٹ کراچی کے سینئر کمرشل افسر مسٹر نیتھن سیفرٹس سے کہا کہ ہماری خواہش ہے کہ امریکی حکومت مارچ 2020 ء میں امریکی شہر ہوسٹن میں منعقد ہونے والی ایکسپو میں سرکاری سطح پر تعاون کرے تاکہ دونوں ملکوں کے ایکسپورٹرز دوطرفہ کاروباری تعلقات کو مزید بڑھا سکیں اور ایکسپورٹرز دوطرفہ منڈیوں تک باآسانی رسائی حاصل کرسکیں۔  اس موقع پر FPCCI کی ممبر محترمہ شاہین شیریں نے معزز مہمانوں کو بتایا کہ پاکستانی خواتین بزنس میں پیش پیش ہیں، خواتیں ایکسپورٹرز ہنڈی کرافٹ اور دیگر مصنوعات امریکہ ایکسپورٹ کرنے کی خواہش رکھتی ہیں اس سلسلے میں امریکی قونصلیٹ کا تعاون حاصل ہو توخواتین کو کاروباری طور پر مستحکم ہونے کیلئے زیادہ آسانی ہوگی۔ آخر میں چیئرمین کونسل امتیاز حسین نے معزز مہمانوں کا خصوصی طور پر شکریہ ادا کیا اور مہمانوں کوشیلڈز اور پھولوں کے گلدستے پیش کئے۔


اپنا تبصرہ بھیجیں