مجھے پھول نہیں، مالی مدد چاہیے، شوکت علی

معروف لوک گلوکار شوکت علی کا کہنا ہے کہ اُن کو پھولوں کی نہیں بلکہ مالی مدد کی ضرورت ہے۔

لاہور کے سروسز اسپتال میں زیرِ علاج پاکستان کے معروف لوک گلوکار شوکت علی کا کہنا ہے کہ اُن کو پھولوں کی نہیں بلکہ اپنے علاج کے لیے مالی مدد کی ضرورت ہے، شوکت علی نے کہا کہ پنجاب کے وزراء میری عیادت کے لیے آئے اور میرے لیے پھول لے کر آئے لیکن مجھے پھولوں کی ضرورت نہیں ہے
شوکت علی نے کہا کہ پاکستان کے لیے میری خدمات آپ سب کے سامنےہیں، میرے پاس اتنی آمدنی نہیں ہے کہ میں اپنا علاج کرواسکوں، میں چاہتا ہوں کہ حکومت میری مالی مدد کرے ، اُنہوں نے کہا کہ کسی فنکار کا اِس طرح دُنیا سے رخصت ہونا اُس کے ملک کی حکومت کے لیے انتہائی افسوسناک بات ہوگی۔

گلوکار کے بیٹے عمران شوکت علی نے کہا کہ میرے والد صاحب نے لوک گائیکی کی دُنیا میں پاکستان کے لیے ایک اہم کردار ادا کیا ہے، میرے والد نے اپنی ساری ز ندگی اپنے ملک کے لیے وقف کی ہے، میرے والد نے جو 1965 اور 1971 کی جنگوں کے دوران گانے گائے تھے حکومت اُس کو کیسے نظر انداز کر سکتی ہے؟
گلوکار شوکت علی گزشتہ کچھ عرصے سے بیمار ہیں اور کچھ دِن سے لاہور کے سروسز اسپتال میں زیرِ علاج ہیں، ڈاکٹر کے مطابق اُن کو دِل، گُردوں اور معدے کا مرض لاحق ہے