ڈپٹی کمشنر شکیل احمد بھٹی نے ضلع میں کھاد کی طلب و رسد اور قیمتوں کے جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ضلع میں زرعی کھادوں کی مصنوعی قلت یا بلیک مارکیٹنگ برداشت نہیں کی جائے گی ملوث ڈیلرز کو جرمانہ کرنے کی بجائے براہ راست مقدمہ درج کرتے ہوئے حوالات میں بند کیا جائے گا۔

رحیم یارخان (وحید رشدی) ڈپٹی کمشنر شکیل احمد بھٹی نے ضلع میں کھاد کی طلب و رسد اور قیمتوں کے جائزہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ضلع میں زرعی کھادوں کی مصنوعی قلت یا بلیک مارکیٹنگ برداشت نہیں کی جائے گی ملوث ڈیلرز کو جرمانہ کرنے کی بجائے براہ راست مقدمہ درج کرتے ہوئے حوالات میں بند کیا جائے گا۔انہوں نے تمام تحصیلوں کے اسسٹنٹ کمشنرز، اسسٹنٹ ڈائریکٹر زراعت اور ریونیو افسران کو ہدایت کی کہ کھاد کی بلیک مارکیٹنگ کے حوالہ سے زیرو ٹالرنس پالیسی اپنائی جائے اور جو ڈیلر کھاد کی گرانفروشی میں ملوث ہو اس کے خلاف مقدمہ درج کرایا جائے ڈپٹی کمشنر نے کھاد ڈیلرز کوہدایت کی کہ وہ ضلع میں قائم سہولت سنٹرز پر فرٹیلائزر کمپنیوں کی جانب سے فراہم تمام کھادوں کا ریکارڈ نمایاں جگہوں پر آویزاں کریں کسی فریق کے ساتھ زیادتی نہیں کی جائے گی جبکہ ضلع میں صرف وہی ڈیلرز کھاد کی فروخت کرنے کا مجاز ہو گا جس کے نام سے فرٹیلائزر کمپنیاں سپلائی فراہم کریں گی، کھاد ڈیلرز اپنی فرم کے نام سے آنے والی کھاد کسی دوسرے مقام پر فروخت نہیں کر سکتے اس پر سختی سے عملدرآمد کو یقینی بنایا جائے۔انہوں نے اسسٹنٹ کمشنرز اور محکمہ زراعت کے افسران کو ہدایت کی کہ تمام تحصیلوں میں شکایات سنٹرز قائم کئے جائیں اور مہنگے داموں کھاد فروخت کرنے کی شکایت پر فوری ایکشن لیا جائے۔اجلاس میں ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر(ریونیو) احمد رضا بٹ، اسسٹنٹ کمشنر وقاص ظفر، حماد حامد، ڈی او انڈسٹریز عماد الدین جتوئی، ڈپٹی ڈائریکٹر زراعت یوسف الرحمن سمیت کھاد ڈیلرز ایسوسی ایشن کے ضلعی صدر اور دیگر عہدیداران موجود تھے

https://www.youtube.com/watch?v=ak0DHASC