مونٹریال پروٹوکول، یونائیٹڈ نیشن ڈیولپمنٹ پروگرام اور سرسید یونیورسٹی کے زیرِ اہتمام عالمی اوزون ڈے کے موقع پر آگاہی مہم کے ایونٹ کا انعقاد۔

کراچی، 04/دسمبر2023ء۔۔۔ مونٹریال پروٹوکول، یونائیٹڈ نیشن ڈیولپمنٹ پروگرام اور منسٹری آف کلائمیٹ چینج اینڈ اینوائرنمنٹل کوآرڈینیشن کے نیشنل اوزون یونٹ نے سرسید یونیورسٹی آف انجینئرنگ اینڈ ٹیکنالوجی کے اشتراک سے عالمی اوزون ڈے کے موقع پر آگاہی مہم کے تحت آواری ہوٹل میں ایک تقریب کا اہتمام کیا۔

MoCC & EC کے ایڈیشنل سیکریٹری سید محمد مجتبیٰ حسین،ARR-UNDP کے عامر خان گورایا کی رہنمائی اور ہدایت اور مونٹریال پروٹوکول کے پروجیکٹ مینجر سلیم جنجوعہ کی انتظامی مہارت میں مونٹریال پروٹوکول اوزون، موسمیاتی تبدیلیوں اور دیگر متعلقہ شعبوں میں قومی اور بین الاقوامی سطح پر مختلف اہم سرگرمیاں انجام دے رہا ہے۔

سرسید یونیورسٹی کے کلیہ سول انجینئرنگ اینڈ آرکیٹکچر کے رئیس پروفیسر ڈاکٹر میر شبرعلی نے خطبہ استقبالیہ پیش کیا اور اوزون کے تحفط جیسے اہم موضوع پر آگاہی پیدا کرنے کی سرگرمیوں کے انعقاد پر مونٹریال پروٹوکول کی کوششوں کا سراہا۔

مہمانِ اعزازی ڈاکٹرسلیم جنجوعہ،مونٹریال پروٹوکول UNDP، نے افتتاحی کلمات پیش کئے اور عالمی اوزون ڈے 2023 سے متعلق آگاہی مہم کے انتظامات اور مونٹریال پروٹوکال کے بارے میں تفصیل سے بتایا۔انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ اوزون کو ختم کرنے والے مادوں سے مرحلہ وار چھٹکارہ پانے میں اکیڈمیا ایک جامع کردار ادا کررہی ہے۔ پالیسی پر مبنی تحقیق اور جدید منصوبوں کے اجراء کے ذریعے بین لاقوامی کمٹمنٹ کے تحت مقرر کردہ اہداف کو حاصل کرنے میں تعلیمی اداروں کا ایک جامع کردار ہے۔ اس عزم کے ساتھ مونٹریال پروٹوکول UNDPنے آگاہی بڑھانے کی مہمات کا ایک سلسلہ شروع کیا ہے اور تعلیمی اداروں کے ساتھ شراکت داری قائم کرنے اور اسے برقرار رکھنے میں سرگرم عمل ہے تاکہ مونٹریال پروٹوکول کے حوالے سے بین الاقوامی وعدوں کو پورا کرنے کے لیے مربوط کوششیں کی جائیں۔

اس موقع پر سرسید یونیورسٹی کے وائس چانسلر پروفیسر ڈاکٹر ولی الدین نے بطور مہمان تقریب میں خصوصی طور پر شرکت کی اور اپنے تاثرات پیش کئے۔انہوں نے کراچی میں ایک ایسے موضوع پر آگاہی مہم کے انعقاد پرڈاکٹرسلیم جنجوعہNPM (Montreal Protocol)۔UNDP کی کوششوں کو سراہا جو ماحولیاتی پائیداری کے لیے ضروری ہے اور کرہ ارض پر انسانی بقا کو یقینی بنانے کے لیے اہم ہے۔

اس موقع پرجامعہ کراچی کے شعبہ کیمیا کی سابق چیئر پرسن ڈاکٹر حاجرہ طاہر نے بھی حاضرین سے خطاب کیا۔

سیشن ODS، کیگالی ترمیم اور اوزون کی تہہ سے متعلق تقاریر، پریزنٹیشن اور ٹیکنیکل ڈسکشن پر مشتمل تھا۔بعدازاں ابلاغ سے متعلق ایک سرگرمی بھی ہوئی جس میں سرسید یونیورسٹی کے طلباء نے اوزون سے متعلق ایک انٹر ایکٹو کوئز میں حصہ لیا جس میں فاتحین کا انتخاب کیا گیا۔ طلبا ء نے پوسٹرز بھی تیار کئے جن میں اوزون کے تحفظ سے متعلق اہم پیغامات درج تھے۔

مختلف محکموں اور اداروں کے اسٹیک ہولڈرز اور شرکاء نے متفقہ طورپر اوزون کی تہہ کے تحفظ کی ضرورت، ODS کو مرحلہ وار ختم کرنے اور مونٹریال پروٹوکل اور متعلقہ بین الاقوامی معاہدوں کی تکمیل کو یقینی بنانے کی ضرورت پر زور دیا۔

UNDP اور دیگر ڈونر ایجنسیوں کے تعاون سے مونٹریال پروٹوکول جیسے ترقیاتی منصوبوں نے قابلِ تعریف کام کیا ہے اور ڈاکٹر سلیم جنجوعہ کی قیادت میں اس اچھے کام کو جاری رکھنے کی ضرورت ہے۔تمام سرکاری محکموں اوراسٹیک ہولڈرز کو بھی ماحولیاتی تحفظ میں تیزی، اور موثر و فعال کردار کو یقینی بناناچاہئے۔ وقت کی ضرورت ہے کہ تمام اسٹیک ہولڈرز (حکومت، تعلیمی ادارے، عطیہ دہندگان)اوزون کوتنزلی سے بچانے کے مشترکہ ہدف کے حصول کے لیے مل کر کام کریں اور اس طرح ہماری آنے والی نسلوں کے لیے کرہ ارض کو ایک محفوظ سیارہ بنانے کو یقینی بنائیں۔

=========================

https://www.youtube.com/watch?v=ak0DHASC