پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ کے لیے آسٹریلیا کرکٹ ٹیم کا اعلان


کراچی (عبدالصمد) پاکستان کے خلاف پہلے ٹیسٹ کے لیے آسٹریلین کرکٹ ٹیم کا اعلان کردیا گیا، آسٹریلیا کے نیشنل سلیکشن پینل نے پاکستان کے خلاف پرتھ میں کھیلے جانے والے ویسٹ ٹیسٹ کے لیے پیٹ کمنز کی قیادت میں 14 رکنی آسٹریلوی کرکٹ ٹیم کا اعلان کیا، دیگر کھلاڑیوں میں ڈیوڈ وارنر، عثمان خواجہ، اسٹیو اسمتھ، مارنس لبوشین، نیتھن لوئن، مچل مارش، لانس مورس، مچل اسٹارک، اسکاٹ بولینڈ، ایلکس کیری، کیمرون گرین، جوش ہیزل وڈ اور ٹریوس ہیڈ شامل ہیں، دونوں ٹیموں کے مابین سیریز کا پہلا ٹیسٹ 14 سے 18 دسمبر تک پرتھ اسٹیڈیم میں کھیلا جائے گا۔ آسٹریلیا کے نیشنل سلیکشن پینل جارج بیلے کا کہنا ہے کہ پیٹ کمنز کی قیادت میں موجودہ گروپ شاندار کارکردگی کا مظاہرہ کررہا ہے۔ اعلان کردہ اسکواڈ میں شامل 14 میں سے 13 ارکان ورلڈ ٹیسٹ چیمپئن شپ کے فاتح اسکواڈ کا حصہ تھے جبکہ لانس مورس کو کمر کی انجری سے مکمل صحت یابی کے بعد دوبارہ اسکواڈ میں شامل کرلیا گیا ہے، جارج بیلے نے کہا کہ ہمیشہ کی طرح، ڈومیسٹک کرکٹ میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے کھلاڑیوں کے لیے انٹرنیشنل اسکواڈ میں جگہ بنانے کے مواقع موجود ہیں۔ چاہتے ہیں ممکنہ کھلاڑی قومی سطح پر مسلسل مضبوط کارکردگی کا مظاہرہ جاری رکھیں۔ ان میں سے اکثر کھلاڑی بدھ سے پاکستان کے خلاف چار روزہ میچ کے لیے پی ایم الیون کا بھی حصہ ہیں۔
====================

اسپاٹ فکسنگ کیس میں سزا یافتہ سلمان بٹ کو سلیکشن کمیٹی سے فارغ کردیا گیا۔ چیف سلیکٹر وہاب ریاض سوشل میڈیا پر کڑی تنقید کے بعد سلمان بٹ کو اپنے کنسلٹنٹ کے عہدے سے ہٹانے پر مجبور ہوگئے۔

لاہور کے قذافی اسٹیڈیم میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وہاب ریاض کا کہنا تھا کہ سلمان بٹ کو کنسلٹنٹ بنانے کا فیصلہ میرا تھا اور میں ہی یہ فیصلہ واپس لے رہا ہوں۔ سلمان بٹ کرکٹ کو سمجھتے ہیں، سلمان بٹ کا اب نام واپس لے لیا ہے۔

چیف سلیکٹر وہاب ریاض کا کہنا تھا کہ پاکستان کرکٹ بورڈ کو خراب کرنے کی کوشش کی گئی، سلمان بٹ کا نام واپس لینے کا فیصلہ صرف میرا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ویسے تو سلمان بٹ اپنے کیے کی سزا بھگت چکے ہیں، لیکن وہ نہیں چاہتے کہ سلمان بٹ کے بارے مزید غلط باتیں کی جائیں۔

سلمان بٹ کو سلیکشن کنسلٹنٹ بنانے پر سوشل میڈیا پر تبصرے کیے گئے تھے کہ ’13 برس بعد بھی اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل تکلیف دیتا ہے‘۔

کسی نے فیصلے کو ’کرکٹ کی تاریخ کا سیاہ دن‘ کہا تو کسی نے کہا ’سلمان بٹ نے بحیثیت کپتان جو کیا ان پر تو گلی کی ٹیپ بال کرکٹ کھیلنے پر بھی پابندی ہونی چاہیے۔‘

2010 کے دورۂ انگلینڈ کے اسپاٹ فکسنگ اسکینڈل پر آئی سی سی نے سلمان بٹ پر دس سال کی پابندی لگائی تھی۔

https://www.youtube.com/watch?v=ak0DHASC