نگراں وزیر کھیل سندھ ڈاکٹر جنید علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے پاکستان ہاکی فیڈریشن (پی ایچ ایف) کو دی جانے والی 10 کروڑ روپے کی سالانہ خصوصی گرانٹ روکنے کا فیصلہ کیا ہے،

کراچی (رپورٹ.. عبدالصمد) نگراں وزیر کھیل سندھ ڈاکٹر جنید علی شاہ نے کہا ہے کہ سندھ حکومت نے پاکستان ہاکی فیڈریشن (پی ایچ ایف) کو دی جانے والی 10 کروڑ روپے کی سالانہ خصوصی گرانٹ روکنے کا فیصلہ کیا ہے، نگراں وزیر کھیل سندھ ڈاکٹر جنید علی شاہ نے کے ایچ اے اسپورٹس کمپلیکس میں یوتھ ہوسٹل کا سنگ بنیاد اور بلیو آسٹرو ٹرف کی افتتاحی تقریب کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سندھ حکومت نے ہاکی فیڈریشن کو دی جانیوالی سالانہ گرانٹ روک دی ہے، سندھ حکومت کا ہاکی فیڈریشن کو سالانہ گرانٹ دینے کی منطق سمجھ میں نہیں آئی،

مجھے خطیر رقم کی گرانٹ کا علم ہوا تو حیران رہ گیا، پی ایچ ایف وفاق کے ماتحت اداراہ ہے، سندھ حکومت پر فیڈریشن کا معاشی بوجھ کیوں ڈالا گیا، سندھ حکومت کو گرانٹ دینی ہے تو سندھ ہاکی ایسوسی ایشن کو دیں، انہوں نے کہا کہ چونکہ ابھی ہاکی فیڈریشن کا آڈٹ ہورہا ہے اس لئے ہمیں یہ بھی معلوم کرنا ہے کہ گزشتہ چار سالوں میں جو 40 کروڑ روپے پی ایچ ایف کو دیئے گئے ہیں آیا وہ صحیح جگہ خرچ بھی ہوئے ہیں یا نہیں، آڈٹ کے بعد ہی گرانٹ دینے کا فیصلہ کیا جائیگا. جنید علی شاہ کا کہنا تھا کہ پاکستان ہاکی فیڈریشن اور پاکستان کرکٹ بورڈ کی سیٹوں پر بیٹھے اعلی عہدیداران اپنے اختیارات کا غلط استعمال کرتے ہیں، ذکاء اشرف عمر رسیدہ ہیں، پی سی بی کا چیئرمین کسی نوجوان کو ہونا چاہیے، 90 سال کا چیئرمین نوجوان کھلاڑیوں کے مسائل اور اسپورٹس کو فروغ نہیں دے سکتا، ہاکی اور سیاست ایک دوسرے سے جڑے ہوئے ہیں، پی ایچ ایف اور پی سی بی میں ایسے لوگ سیٹوں پر بیٹھے ہیں جن کا ٹریک رکارڈ کچھ نہیں، ایسے لوگ اپنے اختیارات اور شخصیات کا غلط استعمال کررہے ہیں، ایسے لوگ سیٹوں سے چمٹے رہنا چاہتے ہیں.
=====================

https://www.youtube.com/watch?v=ak0DHASC