حکومت سندھ اور یونیسیف نے رولنگ ورک پلان 2020 پر دستخط کردئے۔

۔ حکومت سندھ اور یونیسیف نے رولنگ ورک پلان 2020 پر دستخط کردئے۔
چائلڈ لیبر سروے کے لیے 432 بھرتیوں کی منظوری، سروی وقت پر مکمل کیا جائے۔ چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ
حکومت سندھ اور یونیسیف نے رولنگ ورک پلان 2020 پر دستخط کردئے۔ حکومتِ سندھ کی جانب سے چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ اور  یونیسیف کے جانب سے ڈپٹی ریپرزنٹو تاجودین اوئیوالے نے دستخط کیے. اس موقع پر چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ ورک پلان میں چائلڈ لیبر سروے، ڈجیٹل برتھ رجسٹریشن، تمام اضلاع چائیلڈ پروٹیکشن یونٹ کا قیام اور بچوں کی تعلیم کے منصوبے شامل ہیں۔ انہونے کہا کے یہ منصوبے صوبائی حکومت اور اقوام متحدہ کے چلڈرنز فنڈ (یونیسیف) نے مشترکہ فنڈز سے شروع کئے جائیں گے۔ اس دوران صوبائی سیکریٹری لیبر رشید احمد سولنگی نے بتایا کے محکمہ لیبر یونیسیف کی مدد سے چائیلڈ لیبر سروے کرنے جا رہا ہے جس کے لئے سرویئر، انیومیلیٹر اور آبزرور بھرتی کرنے کی منظوری دی جائے تا کے سروی وقت پر مکمل کیا جا سکے۔ اس دوران چیف سیکریٹری سندھ نے محکمہ لیبر کو چائلڈ لیبر سروے کے لیے 432 بھرتیوں کی منظوری دے دی جس میں 215 میل انیومیریٹر، 72 فیمیل انیومیریٹر،72  آبزرور اور 72 سرویئر بھرتی کرنے کی منظوری دے دی۔ چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ نے محکمہ لیبر کو ہدایت کی کے چائیلڈ لیبر سروے کو وقت پر مکمل کیا جائے کی ۔چائلڈ لیبر سروے کے بعد حکومت کو پالیسی بنانے میں مدد ملے گی۔ چیف سیکریٹری سندھ نے کہا کے وہ آئوٹ آف اسکول بچوں کی تعلیم کے لئے کوشاں ہیں انہونے کہا کے ایسے بچوں کے لئے ووکیشنل اور ٹیکنیکل تعلیم کے منصوبے بھی شروع کئے جائیں گے۔ اس دوران بتایا گیا کے یونیسیف کی مدد سے سندھ حکومت تھر پارکر کے 50 ڈسپینسریز کو برتھ اسٹیشن بنارہی ہے۔  اس دوران یونیسیف کے  ڈپٹی ریپرزنٹو تاجودین اوئیوالےنے  کہا کے سندھ صوبے میں 30 ملین ڈالر سے منصوبے شروع کرے گی جس میں تعلیم، صحت، نیوٹریشن اور بچوں کے متعلق پالیسی شامل ہے۔ چیئرپرسن پلاننگ ناہید شاہ درانی، سیکریٹری صحت زاہد عباسی، سیکریٹری لیبر رشید احمد سولنگی، سیکریٹری سوشل ویلفیئر ڈاکٹر محمد نواز شیخ، سیکریٹری پبلک ہیلتھ انجینئرنگ نیاز عباسی سمیت دیگر بھی اس موقع پر موجود تھے۔

کیٹاگری میں : صحت