صوبے کے مفادات وفاق کی وجہ سے خطرے میں نظر آرہے ہیں، متبادل توانائی پالیسی پر وفاقی حکومت نے صوبوں سے مشاورت نہیں کی : صوبائی وزیر توانائی امتیاز شیخ

متبادل توانائی پالیسی پر تحفظات ہیں اسے رد کرتے ہیں سندھ واحد صوبہ ہے جہاں ہوا کے زریعے بجلی بن سکتی ہے،افسوس ہے کہ صوبے سے مشاورت نہیں کی جارہی ایک سال سے مشترکہ مفادات کونسل کا اجلاس نہیں بلایا جارہا، وزیر توانائی سندھ امتیازشیخ نے وفاقی حکومت سے مطالبہ کیاکہ صوبوں کے خدشات کو متبادل توانائی پالیسی میں شامل کیا جائے،گیس،تیل اور دیگر قدرتی وسائل سندھ میں ہیں لیکن صوبے کو مشاورت میں شامل نہیں کیا جارہا اوگرا میں سندھ کی نمائندگی نہیں پانی میں بھی سندھ کے ساتھ زیادتی کی جارہی ہے،انہوں نے کہا تیل گیس اور سرکاری نوکریوں پر بھی سندھ کو نظرانداز کیا جارہا ہے، وزیر توانائی سندھ نے کہا بلوچستان کے وزیراعلی سے ملاقات کرکے مشترکہ حکمت عملی بنائی جائے گی،متبادل توانائی پالیسی سےٹیرف میں اضافہ ہوگاصوبوں کے اختیارات کو وفاقی متبادل توانائی پالیسی میں چھینا گیاہے، متبادل توانائی پالیسی کےخلاف مشترکہ مفادات کونسل میں اپناموقف دینگےسندھ پاکستان کی انرجی سیکورٹی ہے وزیر توانائی سندھ امتیازشیخ نے کہا کہ بلاول بھٹو زرداری نےمحکمہ توانائی کی کارکردگی پراطمینان کااظہارکیا ہے انہوں نے کہا کہ وفاقی حکومت کی متبادل توانائی پالیسی پر شدید تحفظات ہیں متبادل توانائی پالیسی پر صوبوں کو اعتماد میں نہیں لیاگیا۔

سندھ حکومت کو متبادل توانائی پالیسی پر خدشات ہیں صوبوں کےحقوق کو نظرانداز کیاگیاہے،وفاقی حکومت کی متبادل توانائی پالیسی کو مکمل مسترد کرتےہیں سندھ واحد صوبہ ہے جہاں ہوا سےبجلی بنانے کےمنصوبے کام کررہے ہیں وسائل صوبےکے پاس ہیں اور ہم سےمشاورت ہی نہیں کی گئی متبادل توانائی پالیسی میں صوبوں کی تجاویز کو شامل کیاجائے۔ انہوں نے مذید کہا کہ ونڈ پاور کوریڈور سندھ میں ہے ہم سےبات ہی نہیں کی گئی سندھ میں گیس وتیل کےذخائر ہیں مگر وفاق میں ہماری نمائندگی نہیں ہے پانی گیس کےمسئلے پرسندھ کےساتھ زیادتی کےبعد توانائی کےشعبےمیں بھی ذیادتی ہورہی ہےمتبادل توانائی پالیسی پر ہمارے تحفظات کو نہیں سنا گیا تو قابل عمل نہیں ہوگا،امتیاز شیخ نے کہا کہ کے الیکٹرک میں خامیاں اور کوتاہیاں ہیں،اگر کراچی میں کوئی پاور کمپنی آنا چاہے توہم خوش آمدید کہیں گے،گزشتہ بارشوں کے دوران کرنٹ لگنے سے ہلاکتوں پر نیپراکے الیکٹرک کے خلاف انکوائری کررہی ہےکرنٹ لگنے سےہلاکتوں پر نیپرا کی مفصل رپورٹ آنیوالی ہے،

 

انہوں نے کہا کہ 6 ہزار میگاواٹ منصوبوں پر پیپر ورک مکمل ہے لیکن وفاقی حکومت کی طرف سے رکاوٹیں ڈالی جا رہی ہیں،الیکٹرک سٹی ایکٹ اور نیپرا ایکٹ کے تحت الیکٹرک انسپیکٹر کاروائی کرتے ہیں الیکٹرک انسپیکٹرز کی کارگردگی سے مطمین نہیں ہوں الیکٹرک انسپیکٹرز کی کارکردگی پر ازسرنو جائزہ لینگے،امتیاز شیخ نے کہا کہ ورلڈ بنک کے تعاون سےدولاکھ گھروں کوسولرپاورپلانٹ لگانے کے لئے منصوبا بنایاگیا ہے جناح اسپتال سمیت شہرکے بڑے اسپتال آلٹرنیٹ سولرپر منتقل کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ کراچی الیکٹرک کو بجلی کم مل رہی ہےتھر سےچار ہزار میگاواٹ مزید بجلی کی پیداوار جلد شروع ہوجائےگی کےفور منصوبے کےلیےبجلی کی فراہمی پر کام کررہے ہیں محکمہ توانائی نے ویسٹ ٹو انرجی پر بھی کام شروع کیا ہے، وزیر توانائی نے کہاکہ آئل اینڈ گیس کمپنیز میں کام کرنیوالےافراد کی تفصیلات جمع کررہے ہیں سندھ میں 30فیصد آبادی آف گرڈ ہےورلڈ بینک کےتعاون سےدیہات میں سورج سےبجلی کی فراہمی کا منصوبہ ہے متبادل توانائی منصوبوں کےلیےزمین سندھ حکومت نے دی ہے۔