شہر کراچی میں اخبارات کی فروخت پر غیر اعلانیہ پابندی عائد کردی گئی

تجاوزات کے خلاف آپریشن کی آڑ میں پولیس نےاخبار فروشوں کا جینا دوبھر کردیا شہر میں اخبارات کی فروخت پر غیر اعلانیہ پابندی عائد کردی پہلے مرحلے میں شہر میں بھکاریوں کےخلاف کریک ڈاوًن کی آڑ میں سڑکوں پر اخبار فروخت کرنیوالےہاکرز کی پکڑ دھکڑ کی اب کراچی پولیس کے نئے سربراہ نے چارج سنبھالتے ہی غیر اعلانیہ طور پر شہر میں اخبارات کی فروخت پر پابندی عائد کردی سپریم کورٹ کے احکامات کے آڑ میں کے ایم سی اور کمشنر کراچی سے منظورشدہ مختلف علاقوں میں 100 سے زائد اسٹال مسمار کردیئے۔

سسکتی پرنٹ میڈیا پرپولیس کی جانب سے کاری وار ہے آپریشن کے پعد اخبارات کی سرکولیشن میں نمایاں کمی ہوگئ گزشتہ سال کم سرکولیشن کے باعث 10 بڑے اخبارات بند ہوچکے ہیں سائیں سرکار کو خوش کرنے کے لئےامریکہ سے امپورٹ شدہ کراچی پولیس سربراہ نے شہر بھر اسٹریٹ کرائم اور جرائم کی وارداتوں پر کنٹرول کرنے کی بجائے ہزاروں افراد کا روزگار چھین لیا اس اقدام سے بے روزگاری میں اضافہ ہوگا اخبار فروش یونین نے ہر فورم پر رابطہ کیا لیکن کوئی نتیجہ نہیں نکلا پولیس اگلے مرحلے میں شہر میں لگنے والے۔ اخبارات کے ڈپو ختم کرواکے پرنٹ میڈیا کا صفایا کردے گی اس آپریشن کے خلاف اخبار فروش یونین کے علاوہ صحافتی تنظیموں اور اخباری مالکان کو ملکر جنگ لڑنی چاہئے۔