خواجہ آصف کے خلاف قومی اسمبلی میں تحریک استحقاق جمع

مسلم لیگ ن کے سینئر رہنما خواجہ آصف کے خلاف قومی اسمبلی میں جمع کرائی گئی تحریک استحقاق میں وفاقی وزیرسائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری کا کہنا تھا کہ14نومبر کو خواجہ آصف نے وفاقی اور پنجاب حکومت کے نمائندوں کے بیان کو اسمبلی میں توڑ مروڑ کر پیش کیا،خواجہ آصف نے نواز شریف کی صحت سے متعلق حکومتی نمائندوں کے موقف کو غلط طریقے سے پیش کیا،اسلام آباد ہائی کورٹ کے فیصلے میں لکھا ہے کہ وفاقی اور صوبائی حکومت کو نواز شریف کی ضمانت پر کوئی اعتراض نہیں تھا،خواجہ آصف نے “نواز شریف کو مرنے دو” جیسا جملہ حکومتی نمائندوں سے منسوب کیا۔ تحریک میں مزید کہا گیا کہ خواجہ آصف کی جانب سے قومی اسمبلی کے فلور پر جھوٹ بولنے سے پورے ایوان کا استحقاق مجروح ہوا،خواجہ آصف کی اسمبلی فلور پر غلط بیانی کے معاملے پر بحث کرائی جائےاور معاملہ قومی اسمبلی کی قوائد و ضوابط کمیٹی کو بھیجا جائے۔
واضح رہے کہ قومی اسمبلی اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے لیگی رہنما خواجہ آصف نے کہا تھا کہ موجودہ حکمرانوں میں بدلے کی آگ میں بھڑک رہی ہے، 7 ارب روپے کے مچلکے کی کوئی حیثیت نہیں لیکن یہ پاکستان کی سیاست کو گدلا کردے گی ، نواز شریف ملک سے جانا نہیں چاہتے ہیں ،عدالتوں نے انہیں ریلیف دیا ، نوازشریف تیار ہوئے تو حکمرانوں نے ان کی جان سےکھیلنا شروع کردیا ، فروغ نسیم کاش مشرف کے لیے بھی یہی دلائل رکھتے، نواز شریف واپس آئے گا، عوام اس کو واپس لے کر آئے گی۔ اگر نواز شریف کا راستہ روکا گیا اور خدانخواستہ کچھ ہوا تو حکومت ذمہ دار ہوگی۔