چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ کی زیر صدارت کراچی میں آٹے کی بڑھتی قیمت کے متعلق متعلق اہم اجلاس

خبر۔
چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ کی زیر صدارت کراچی میں آٹے کی بڑھتی قیمت کے متعلق متعلق اہم اجلاس

اجلاس میں سیکریٹری خوراک، سیکریٹری، سیکریٹری ایگریکلچر و پرائیز کنٹرول، فلور مل ایسوسیشن کے نمائندوں نے شرکت کی۔

کراچی شہر میں ہر ماہ ضرورت کے مطابق 2 لاکھ میٹرک ٹن گندم فراہم کی جارہی ہے۔چیف سیکریٹری سندھ سید ممتاز علی شاہ

حکومت سندھ وقت پر گندم فراہم کر رہی ہے تو قیمتوں میں اظافہ کیسے ہوا؟ چیف سیکریٹری سندھ کا محکمہ خوراک کے افسران پر برہمی کا اظہار

گندم کی زخیرہ اندوزی کرنے والوں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی اور متعلقہ افسران کے خلاف بھی ایکشن ہوگا۔ ممتاز علی شاہ

کراچی میں 76 فلور مل ہی جن میں سے 56 فنکشنل ہیں۔ سیکریٹری خوراک لئیق احمد

حکومت نے گندم کی کوٹہ مقرر کی ہے جس سے بند ملون کو گندم کا کوٹہ نہیں ملنا چاہئی۔ فلور مل ایسوسیشن

کوٹہ سے متعلق پالیسی کو جائزہ کےلئے سندھ کابینہ کے اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ ممتاز علی شاہ

جو فلور مل بند ہیں انکو گندم نہیں دی جائے گی۔ ممتاز علی شاہ

پاسکو سے بھی 4 لاکھ میٹرک ٹن گندم مل رہی ہے شہر میں آٹے کی قیمت پر ہو صورت قابو پایا جائے۔ ممتاز علی شاہ کی کمشنر کراچی کو ہدایت

گودام میں گندم کی کوالٹی کا جائزہ لینے کہ لئے محکمہ خوراک، ضلعی انتظامیہ اور فلور مل ایسوسیشن کے نمائندوں پر مشتمل 4 رکنے کمیٹی قائم۔

کمیٹی 24 گھنٹے میں کراچی کے گودام میں گندم کے متعلق رپورٹ پیش کر ے گی۔