جنوبی ایشیا میں عہد حاضر کی گریٹ وژنری ایجوکیشنسٹ شخصیت -ڈاکٹر محمد علی شیخ

اگر کسی نے پاکستان کے تعلیمی شعبے کا روشن رخ  دیکھنا ہو تو اسے سندھ مدرسۃ الاسلام کے وائس چانسلر ڈاکٹر محمد علی شیخ کے کیریئر پر ایک نظر دوڑانی چاہیے وہ بلاشبہ ایک قابل فخر پاکستانی ہیں ۔وہ اس لحاظ سے ایک خوش قسمت انسان ہیں کہ انہیں بانی پاکستان قائداعظم محمد علی جناح کی مادر علمی کے تدریسی عمل سے وابستگی کا اعزاز حاصل ہوا اور انہوں نے اس تاریخ ساز اہمیت کی حامل درسگاہ کو مزید چار چاند لگانے میں کوئی کسر نہیں اٹھا رکھی ۔جو خواب اس عظیم درسگاہ کے بانی خان بہادر حسن علی آفندی جنہیں سندھ کا سرسید بھی کہا جاتا ہے ,نے دیکھا تھا اسے آگے بڑھانے میں ڈاکٹر محمد علی شیخ نے بے مثال کام کیا ہے اسی لئے وہ واقعی قابل فخر اور لائق تحسین ہیں اور پوری قوم کے ہیرو ہیں ۔جیسا کہ آپ سب جانتے ہیں کہ 1887 سے 1892 تک مسٹرجناح یہاں زیر تعلیم رہے ۔اور 1942 میں قائداعظم کے ہاتھوں اسے کالج کا درجہ حاصل ہوا ۔2012 میں اسے یونیورسٹی کی حیثیت دی گئی آج یہ ادارہ 13 دہائیاں مکمل کرکے تدریسی عمل کی چودھویں دہائی میں داخل  ہوچکا ہے ایک سو چونتیس برس پرانا یہ ادارہ اپنی ایک الگ اور منفرد تاریخ رکھتا ہے ڈاکٹر محمد علی شیخ اس کے وائس چانسلر ہیں ۔انہوں نے کراچی یونیورسٹی سے ماس کمیونیکیشن میں پی ایچ ڈی کی اور امریکن یونیورسٹی واشنگٹن سے پوسٹ ڈاکٹرل فیلو فلبرائٹ اسکالر ڈگری حاصل کی۔

 


دیکھا جائے تو وہ 994 1    سندھ مدرسۃ الاسلام  کے سربراہ کے طور پر فرائض انجام دیتے آرہے ہیں پہلے وہ یہاں کے پرنسپل تھے اور اب وہ وائس چانسلر ہیں ۔انہوں نے اس ادارے کی عظمت رفتہ کی بحالی میں انتھک محنت کی ۔شاندار خدمات انجام دیں ان کی کوششوں سے ہی اسے یونیورسٹی کا اعزاز حاصل ہوا ۔یہ بات قابل ذکر ہے کہ ایس ایم آئی اور ڈی سی ا ی ٹی کو یونیورسٹی کا درجہ دلانے میں ان کا اہم کردار رہا اور اب یہ دونوں یونیورسٹی سندھ میں طلبہ کو شاندار تعلیمی سہولتیں اور مواقع فراہم کر رہی ہیں ۔ڈاکٹر محمد علی شیخ نے مختلف اہم سرکاری عہدوں پر بھی فرائض انجام دیے ہیں وہ ڈائریکٹر جنرل صوبائی محتسب اعلی سیکریٹریٹ رہے ۔ڈائریکٹرجنرل سندھ انوائرنمنٹل پروٹیکشن ایجنسی  رہے ۔ڈائریکٹرجنرل سندھ کوسٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی رہے چیئرمین سندھ ٹیکسٹ بک بورڈ کی حیثیت سے فرائض انجام دیے ۔انہوں نے مختلف یونیورسٹیز میں فیکلٹی کی خدمات بھی انجام دیں تاریخ تعلیم اور کمیونیکیشنز سمیت مختلف موضوعات پر متعدد کتابیں بھی تصنیف کر چکے ہیں ۔قائد اعظم محمد علی جناح اور محترمہ بے نظیر بھٹو کی سوانح حیات بھی لکھ چکے ہیں قائداعظم محمدعلی جناح پر ان کی کتاب کو نیشنل بک فاؤنڈیشن پاکستان کی جانب سے سال کی بہترین کتاب کا ایوارڈ بھی ملا ۔قائداعظم پر ان کی کتاب ایجوکیشن سٹرگل اینڈ ا چیو منٹس نے بے پناہ شہرت اور مقبولیت حاصل کی اور اسے عالمی سطح پر بے حد پذیرائی حاصل ہوئی ۔ یہ بات عام طور پر محسوس کی گئی ہے کہ اہم عہدوں پر آنے والی شخصیات عموما خودنمایی کے شوق میں مبتلا ہوکر اپنی پبلسٹی میں مصروف ہو جاتی ہیں مگر ڈاکٹر محمد علی شیخ نے قائد اعظم محمد علی جناح اور بے نظیر بھٹو جیسی شخصیات پر کتابیں لکھنے  پر اپنی توجہ مرکوز کرکے ثابت کیا کہ وہ عظیم شخصیات کو خراج عقیدت پیش کرنے اور دنیا کے سامنے ان کے کارنامے اجاگر کرنے میں ہی قلبی اطمینان اور خوشی محسوس کرتے ہیں۔


ڈاکٹر محمد علی شیخ مذہبی ہم آہنگی کو فروغ دینے والی دوراندیش شخصیت کے مالک ہیں قائداعظم محمد علی جناح کی تعلیمات کو اصل روح کے مطابق زندگی میں آگے بڑھانے کے لئے کوشاں اورسرگرم عمل ہیں ۔ڈاکٹر محمد علی شیخ اپنی ذہانت قابلیت صلاحیت اور محنت کی بدولت ترقی اور کامیابی کا سفر طے کرتے ہوئے یہاں تک پہنچے ہیں انتہائی خوش مزاج ,خوش لباس اور باذوق شخصیت کے مالک ہیں  اعلی اخلاقی اقدار ان کے مضبوط خاندانی پس منظر کی آئینہ دار ہیں سادہ اور دوٹوک گفتگو کرتے ہیں ۔پریکٹیکل انسان ہیں ۔ پاکستانی نوجوانوں کو علم و ترقی کے عرش پر دیکھنا چاہتے ہیں ان کی شخصیت کو نکھارنے اور کردار سازی پر توجہ دینے کی اہمیت کا پورا ادراک رکھتے ہیں اور ان کو دنیا میں پاکستان کا نام روشن کرنے کے لیے تیار کر رہے ہیں یونیورسٹی کے پلیٹ فارم سے اسٹوڈنٹس کو نہ صرف اندرون ملک  اسٹڈی ٹور ز کرانے میں دلچسپی لیتے ہیں بلکہ برطانیہ چین ترکی ملائیشیا کے ساتھ بھی خصوصی معاہدے کرکے طلبہ کو وہاں بھجوا رہے ہیں یہ انتہائی خوش آئند بات ہے۔


کراچی کی ایجوکیشن سٹی میں عملی قدم رکھنے والی سندھ مدرسۃ الاسلام پہلی یونیورسٹی بن چکی ہے یہ اعزاز بھی ڈاکٹر محمد علی کو حاصل ہے کہ انہوں نے یہ اقدام اٹھایا اور اہم پیشرفت کی ۔دور حاضر کے تقاضوں کو پورا کرنے کے ساتھ ساتھ مستقبل کے چیلنجوں پر بھی  ان کی گہری نظر ہے آنے والے وقت کے تقاضوں سے یونیورسٹی کو ہم آہنگ رکھنے کے لیے نئے پروجیکٹس  پر توجہ مرکوز ہے سوشل میڈیا اور ڈیجیٹل میڈیا کے فوائد اور ثمرات سمیٹنے میں بھی یونیورسٹی کسی سے پیچھے نہیں ہے باقاعدہ ایک شعبہ بنایا گیا ہے جہاں ہما وقت نئے آئیڈیاز پر کام ہوتا ہے یونیورسٹی کا اپنا ایف ایم ریڈیو اور ویب ٹی وی اور ویب سائٹ ہے جہاں تمام اہم معلومات مہیا کی جاتی ہے ۔جیوے پاکستان ڈاٹ کام ڈاکٹر محمد علی شیخ  کی سربراہی میں  سندھ مدرسۃ الاسلام یونیورسٹی کی مزید ترقی اور کامیابی کے لئے دعا گو ہے اور نیک تمناؤں کا اظہار کرتی ہے ۔