مولانا فضل الرحمان کا خطاب

مولانا فضل الرحمان کا خطاب

1. گزشتہ ایک سال سے پاکستان دن بہ دن زوال کی طرف جارہا ہے۔ ہماری معیشت آئی ایم ایف کے حوالے کردی گئی ہے۔

2. پاکستان کے تمام ادارے ملکی استحکام کے ھوالے سے اضطراب میں ہیں ، ہم اضطراب میں ہیں

3. تمام سیاسی جماعتیں ، تمام تنظیمیں ، پوری قوم ایک پیج پر ہیں اور متحد ہیں

4. آج خواتین صحافی معترف ہے کہ ڈی چوک کے مقابلے میں یہاں زیادہ عزت ملی۔ ہم عورت کی حقوق کی بات شریعت کی روشنی میں کرتے ہیں

5. مذہبی بنیاد پر قوم کی تقسیم کرنا ، انسانیت کی تقسیم کرنا مغرب کا طریقہ ہے۔ آئیں دلیل کی بنیاد پر بات کرتے ہیں

6. جمعیۃ علماء نے ہر قسم کی سازش کو ناکام بنایا ہے۔ ہم آئین کی بات کرتے ہیں قوم کی بات کرتے ہیں ، ہم نے قوم کو فرقہ واریت سے بچایا ہے

7. کبھی کسی نے سوچا ہوگا کہ جمعیۃ علماء کے اسٹیج پر لبرل اور قوم پرست بھی موجود ہونگے۔؟

8. ایک سابق آرمی چیف کا شکریہ ادا کرتا ہوں کہ انہوں نے ہمارے مطالبات کو آئینی تسلیم کیا ہے۔ ہم آئین کی بات کرتے ہیں اور اس بالادستی کی بات کتے ہیں

9. ان حکمرانوں کو جانا ہوگا، قوم کے حق کو تسلیم کرنا ہوگا۔ ناجائز حکمران سے بات نہیں ہوگی۔ عدالت نے ہمارے احتجاج کو جائز قرار دیا ہے ، ہم پرامن ہیں۔

10. آج پوری قوم ایک صف پر ہے، ان کا احترام کرنا ہوگا۔

11. یہ اجتماع قوم کی آواز ہے، اگر تصادم ہوگا تو قوم کےساتھ ہوگا۔ ہم بحیثیت شہری حق رکھتے ہیں کہ ہمارا اضطراب دور کیا جائے۔

12. ہم ڈٹے ہوئے ہیں ، اپوزیشن متحد ہے، فیصلہ انہوں نے کرنا ہے کہ کب کیا کرنا ہے۔