بلاول بھٹو نے دھرنے میں شرکت کا اشارہ دے دیا

بہاولپور میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ اگر ان کی پارٹی کی سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی پارٹی پالیسی پر نظر ثانی کرتی ہے تو جے یو آئی کے دھرنے میں شرکت کر سکتے ہیں۔بلاول بھٹو نے اپنا موقف دہراتے ہوئے کہا کہ ان کی جماعت فی الحال دھرنے میں شرکت نہیں کرسکتی، یہی پہلے دن سے موقف رہا ہے کہ ہم دھرنے میں شرکت نہیں کریں گے۔ ایک سوال کے جواب میں بلاول بھٹو زرداری نے کہا کہ مولانا فضل الرحمٰن نے نہیں کہا کہ وہ خود وزیراعظم ہاؤس جا کر وزیراعظم عمران خان کو گھسیٹیں گے۔بلاول بھٹو زرداری نے تحریک انصاف کی حکومت کو متنبہ کرتے ہوئے کہا کہ اگر موجودہ حکومت اپنی سمت درست نہیں کرتی تو جمہوری قوتیں بھی غیر جمہوری اقدام اٹھانے پر مجبور ہوسکتی ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ موجودہ حکومت معاشی و سیاسی محاذ پر ناکام ہوچکی ہے۔
قبل ازیں چیئرمین پیپلز پارٹی نے تیز گام ٹرین سانحے میں ہونے والے زخمیوں کی عیادت کی۔سانحہ تیز گام سے متعلق ان کا کہنا تھا کہ وہ زخمیوں کی عیادت کے لیے یہاں آئے ہیں۔ بلاول بھٹوزداری نے کہا کہ شیخ رشید کے دور میں ہی سب سے زیادہ ٹرین حادثات ہوئے۔ انہوں نے وزیر ریلوے شیخ رشید کے استعفے اور سانحہ تیز گام کی انکوائری کا مطالبہ بھی کردیا۔