پاکستانی بچے نے انڈیا کا ریکارڈ توڑ دیا

ذرا نم ہو تو یہ مٹی بڑی زرخیز ہے ساقی۔یہ بات تو وزیراعظم عمران خان بھی اپنی تقریروں میں بارہا کہہ چکے ہیں کہ پاکستان میں پوٹینشل بہت ہے اور اس پوٹینشل کے کارنامے بھی وقتاً فوقتاً سامنے آتے رہتے ہیں۔پاکستان کے کئی نوجوان اور ٹین ایجرز بغیر حکومتی سرپرستی کے فقط اپنی محنت پر کئی انٹرنیشنل ایوارڈز اپنے نام کر کے دنیامیں پاکستان کا نام روشن کرنے کا سبب بن چکے ہیں۔
اب کی بار ایک 11سالہ بچے نے بھی دنیا میں پاکستان کا نام روشن کر دیا ہے۔کراچی کے رہائشی گیارہ سالہ لڑکے نے بھارتی نوجوان کا ریکارڈ توڑ ڈالا۔ایک منٹ میں 57 ممالک کا نام لے کر گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں اپنا نام درج کروالیا۔ کراچی کے علاقے نارتھ ناظم آباد کے رہائشی 11 سالہ ایماز علی ابڑو نے چھوٹی سی عمر میں دنیا بھر میں پاکستان کا نام روشن کردی- گیارہ سالہ لڑکے نے ایک منٹ میں سب سے زیادہ 57 ممالک کے نام لے کر گنیز بک آف ورلڈ ریکارڈ میں اپنا نام درج کروالیا ساتھ ہی انہوں نے بھارتی نوجوان واجو بھالو کا ریکارڈ توڑ دیا۔ہونہار بچے کا اپنی کامیابی کا کریڈٹ والدین اور استاد کو دیتے ہوئے کہنا تھا کہ اس میں میرے والدین کی دعائیں اور اساتذہ کی محنت شامل ہے۔اللہ کا شکر ادا کرنا چاہتا ہوں کہ اللہ نے مجھے اتنی عزت دی، مجھے سکھایا گیا کہ کیسے ریکارڈ توڑنا ہے، میرے دادا دادی کی دعائوں سے اس مقام پر پہنچا ہوں۔
بچے نے کہا کہ سوشل اسٹڈیز میں شروع سے ہی زیادہ نمبر لاتا رہا ہوں، یہ میرا پسندیدہ مضمون ہے اسی لیے ممالک کے نام پر توجہ دی، استاد نے مجھے گنیز ریکارڈ کی کچھ کیٹگریز دکھائیں، جیوگرافی اور میتھ کی کیٹگری مجھے زیادہ پسند آئی اس وجہ سے یہ کیٹگری منتخب کی۔میں اپنے ملک کا نام روشن کرنا چاہتا ہوں اور دنیا کو دکھانا چاہتا ہوں کہ ہمارا ملک کسی ملک سے کم نہیں ہے

اپنا تبصرہ بھیجیں