آسانی سے واپس نہیں جائیں گے

سینئیر صحافی حامد میر نے حکومت کو خبردار کیا ہے کہ مولانافضل الرحمان ایک دفعہ اسلام آباد آگئے توآسانی سے واپس نہیں جائیں گے۔ انہوں نے ٹیوی پروگرام میں بات کرتے ہوئے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان نے اپنی سیاسی زندگی کا سب سے بڑا رسک لیا ہے اور اب وہ اگر اسلام آباد پہنچ گئے تو پھر اتنی آسانی سے واپس نہیں جائیں گے۔
حامد میر نے کہا ہے کہ مولانا فضل الرحمان کے ساتھ بڑی تعداد میں لوگ ہیں ، اس حوالے سے حکومت کے اندازے غلط نکلے ہیں ، اب یہ اعصاب کی جنگ ہے ، مولانا فضل الرحمان جب اسلام آباد پہنچ جائیں گے تو پھر حکومت کے اعصاب کاامتحان شروع ہوجائے گا ۔ حامد میر کا کہناتھا کہ جب مولانافضل الرحمان اسلام آباد پہنچ جائیں گے تو مجمع سے پوچھیں گے کہ کیا کرناہے؟اگر لوگوں نے کہا کہ دھرنا دینا ہے تو مولانا فضل الرحمان دھرنا دینگے جس سے مولانا فضل الرحمان اور حکومت کے اعصاب کا امتحان شروع ہوجائیگا جو پہلے گھٹنے ٹیک دے گا وہ ناکام ہوجائے گا ۔

انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان نے اپنی سیاسی زندگی کا سب سے بڑا رسک لے لیاہے اور وہ اسلام آباد میں کافی دنوں تک دھرنا دینے کا منصوبہ بناکر آرہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان ایک دفعہ آگئے تو پھر اتنی آسانی سے واپس نہیں جائیں گے۔ دوسری جانب آزادی مارچ اپنے سربراہ مولانا فضل الرحمن کی قیادت میں آج صبح ملتان پہنچا ہے، جہاں مولانا فضل الرحمن نے آزادی مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے حکومت کے خلاف جنگ کا اعلان کر دیاہے۔
آزادی مارچ کے شرکاء سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ حکومت جعلی ہے اور نا اہل بھی۔ عوام اس جعلی حکومت کو تسلیم نہیں کرتے۔ انہوں نے مزید کہا کہ آج ساری جماعتیں میرے ساتھ اسٹیج پر موجود ہیں۔عوام کا مینڈیٹ چُرانے والوں کے خلاف جنگ کا اعلان کرتے ہیں۔انہوں نے مزید کہا کہ اس بات پر پُوری قوم کا اتفاق ہے کہ یہ حکومت جعلی ہے۔ اس کے پاس عوام کا مینڈیٹ نہیں ہے۔ ہم پاکستان میں عوام کے ووٹ پر ڈاکے کو تسلیم نہیں کرتے۔ اور ڈاکو کے خلاف جنگ کا اعلان کرتے ہیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں